آئی ایس آئی سے پیسے لینے کے الزامات بے بنیاد ہیں، نوازشریف

October 15, 2015 12:41 pm0 commentsViews: 29

نہ کسی سے پیسے لیے نہ کوئی آفر آئی اور نہ ہی کسی نے رابطہ کیا،
آج تک کوئی شواہد نہیں ملے،رقم دینے کے الزام سے تو یونس حبیب بھی مکر گئے
محض کسی ڈائری میں نام لکھا ہونے سے یہ ثابت نہیں ہوتا کہ میں نے پیسے لیے
یاد نہیں کہ کبھی یونس حبیب سے ملاقات ہوئی ہو، وزیراعظم کا ایف آئی اے میں بیان
اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)وزیراعظم نوازشریف نے آئی ایس آئی سے پیسے لینے کا الزام مسترد کردیا۔ ایک ٹی وی کے مطابق ایف آئی اے کے اینٹی کرپشن ونگ کو ریکار ڈ کرائے گئے بیان میں انہوں نے کہا کہ کسی سے پیسے لیے نہ کوئی آفر ہوئی اور نہ کسی نے رابطہ کیا۔ انہوں نے کہا کہ آج تک کوئی شواہد نہیں ملے ملے، نہ کسی نے ثبوت پیش کیا۔ رقم دینے کے الزام سے تو یونس حبیب بھی مکر گئے تھے، محض کسی ڈائری میں نام لکھا ہونے سے یہ ثابت نہیں ہوتا کہ میں نے پیسے لیے ہیں۔ وہ اس بارے میں کیا کہہ سکتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ یاد نہیں کہ کبھی یونس حبیب سے ملاقات ہوئی ، پیسے لینے کا الزام بے بنیاد ہے۔

آج وزیراعظم نواز شریف کوٹلی ‘آزاد کشمیر
میں بجلی گھر کا سنگ بنیاد رکھیں گے
کوٹلی( مانیٹرنگ ڈیسک) وزیراعظم میاں نواز شریف آج کوٹلی آزاد کشمیر میں 102 میگاواٹ کے گل پورین بجلی گھر کے منصوبے کا سنگ بنیاد رکھیں گے‘ منصوبہ4سال میں مکمل ہوگا۔ اور اس پر32 کروڑ امریکی ڈالر لاگت آئیگی۔

ضمنی الیکشن میں ن لیگ کی ناکامی پر برہمی وفاقی وزراء میں اختلافات‘ وزیراعظم پریشان
نچلی سطح پر پارٹی کے مقامی رہنما کام کررہے اور ناقص کارکردگی کے باعث ہی پارٹی کوشکست ہوئی ہے‘ وزیر اعظم
حلقہ این اے 122 میں ایاز صادق کی انتہائی کم فرق سے کامیابی اور دو حلقوں میں شکست پر رپورٹ طلب‘ وزیراعظم وزراء کے اختلافات سے بھی پریشان
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) وزیراعظم نواز شریف نے ضمنی الیکشن میں پارٹی رہنمائوں کی کارکردگی پر عدم اطمینان کااظہار کردیا ہے‘ دوسری جانب وفاقی وزراء کے اختلافات بھی وزیراعظم کیلئے پریشانی کا سبب بننے لگے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق وزیراعظم نے پی پی147 اور این اے144 میں شکست پر برہمی کااظہار کرتے ہوئے پارٹی کے سینئر رہنمائوں سے رپورٹ طلب کرلی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ وزیراعظم نواز شریف ضمنی الیکشن کے نتائج پر غیر مطمئن ہیں۔ این اے 122 میں تحریک انصاف کے ساتھ سخت مقابلہ‘ لیگی رہنما ایاز صادق کی انتہائی کم فرق سے فتح اور این اے 144 اور پی پی147 میں پارٹی کی شکست پر وزیراعظم نے برہمی کااظہار کیا ہے۔ وزیراعظم نے کہا کہ نچلی سطح پر مقامی رہنما بہتر کام نہیں کررہے۔ ناقص کارکردگی کی وجہ سے پارٹی کو شکست ہوئی ہے۔ وزیراعظم نے پارٹی کے سینئر رہنمائوں کو ہدایت کی ہے کہ دونوں حلقوں میں پارٹی کی شکست پر وجوہات سے متعلق جامع رپورٹ مرتب کرکے پیش کی جائے۔ دریں اثناء ذرائع کے مطابق وفاقی وزراء کے اختلافات وزیراعظم کیلئے پریشانی کا سبب بننے لگے۔ خواجہ آصف وزیر داخلہ چوہدری نثار اور وزیر منصوبہ بندی احسن اقبال سے اختلافات نے وزیراعظم کو پریشان کردیا ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ نندی پور پروجیکٹ میں بد عنوانی کے معاملے پر وزیراعظم کو مشورہ دیا گیا کہ غیر جانبدارانہ تحقیقات کرواکر کرپشن ثابت ہونے پر وفاقی وزیر کو عہدے سے ہٹایا جائے‘ اس سے نہ صرف حکومت کی عوام میں نیک نامی ہوگی بلکہ آئندہ الیکشن پر بھی مثبت اثرات مرتب ہوں گے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ خواجہ آصف سے زارت پانی و بجلی کا قلم دان اس لئے بھی واپس لئے جانے کا امکان ہے کیوں کہ وفاقی وزیر مملکت عابد شیر علی کی وجہ سے وفاقی وزارت اور نئے منصوبوں پر دلچسپی نہیں لے رہے ہیں۔ ایل این جی اسکینڈل کے حوالے سے بھی وزیراعظم کو ایک قریبی دوست نے مشورہ دیا ہے کہ اس کی بھی تحقیقا ت کرائی جائیں۔

 

Tags: