کراچی میں دودھ کا بحران پیدا ہونے کا خطرہ بڑھ گیا

October 15, 2015 1:01 pm0 commentsViews: 63

تازہ دودھ کے نرخ کا تنازع حل نہ ہوسکا‘ دودھ فروشوں نے بھینس باڑے فروخت کرنا شروع کردیئے
سازش کے تحت تازہ دودھ کی فروخت کو بند اورخشک دودھ کمپنیوں کو فائدہ پہنچایا جارہا ہے‘ ڈیری فارمر ایسوی ایشن
کراچی( اسٹاف رپورٹر) کراچی میں دودھ کے نرخ پر تنازع طے نہیں ہو سکا جس کے نتیجے میں تازہ دودھ کا بحران پیدا ہونے کا خطرہ بڑھ گیا ہے۔ ڈیری فارمر ایسوسی ایشن نے مسائل حل کرنے کی اپیل کی ہے معلوم ہوا ہے کہ بھینس کالونی سمیت مختلف علاقوں میں بھینسوں کے باڑوں کے مالکان نے اپنے باڑے فروخت کرنا شروع کر دئیے۔ کراچی ڈیری فارمرز ایسوسی ایشن کے صدر محمد سکندر کا کہنا ہے کہ کچھ لوگ جان بوجھ کر تازہ دودھ کو کراچی میں بند کروا کر پائوڈر والے دودھ اور ڈبوں میں پیک دودھ کی کمپنیوں کو فائدہ پہنچانا چاہتے ہیں اور تازہ دودھ کی صنعت کو مکمل طور پر بند کروانے کیلئے روزانہ باڑوں پر چڑھائی کرکے مالکان کو گرفتار کیا جاتا ہے۔ اس میں اسسٹنٹ کمشنر ابراہیم حیدری پیش پیش ہے بھینس کالونی سمیت کراچی کے دیگر علاقوں میں متعدد باڑہ مالکان نے اپنے باڑے بند کرد ئیے ہیں۔ کیونکہ ڈیری فارم کا روزانہ کی بنیاد پر نقصان ہور ہاہے ہمیں لگتا ہے کہ تازہ دودھ کی صنعت کو تباہ کرنے کی سازش کی جا رہی ہے۔

Tags: