شہر قائد کی 14اہم شخصیات دہشت گردوں کے نشانے پر

October 16, 2015 3:55 pm0 commentsViews: 18

کراچی میں ایک بار پھر ہائی پروفائل ٹارگٹ کلنگ شروع ہونے کا خطرہ، دہشت گرد آسان ہدف کی تلاش میں گھوم رہے ہیں، حساس اداروں کی رپورٹ
جن شخصیات پر دہشت گرد حملوں کا خطرہ ہے ان میں ایم کیو ایم کے چار رہنما، جے یو آئی (ف) کے دو، اے این پی کے دو ،مسلم لیگ ن، جماعت اہل سنت، سنی تحریک اور علماء کونسل کا ایک ایک رہنما شامل ہے
دہشت گرد ان شخصیات کو نشانہ بنا کر شہر کو عدم استحکام سے دو چار کرنا چاہتے ہیں، حساس اداروں کی رپورٹ کے بعد ان شخصیات کو نقل و حرکت محدود کرنے کی ہدایت کردی گئی، سیکورٹی میں اضافہ کیا گیا ہے
کراچی( کرائم ڈیسک) کراچی شہر میں محرم الحرام کے دوران ہائی پرفائل ٹارگٹ کلنگ کا خطرہ پیدا ہوگیا ہے‘ ملک دشمن عناصر اہم شخصیات کو ٹارگٹ کرکے شہر کو عدم استحکام سے دوچار کرنا چاہتے ہیں۔ کراچی میں اہم مذہبی و سیاسی شخصیات کو نقل و حرکت محدود کرنے کی ہدایت کردی گئی جبکہ رہنمائوں کی سیکورٹی میں بھی اضافہ کردیا گیا ‘ ذرائع کے مطابق حساس اداروں نے رپورٹ جاری کی ہے کہ شہر قائد کی14 اہم شخصیات دہشت گردوں کے نشانے پر ہیں۔ رپورٹ کے مطابق سیاسی اور مذہبی جماعتوں کے دہشت گرد خصوصا ضلع غربی میں مخالف تنظیموں کے رہنمائوں کو نشانہ بنانے کا ارادہ رکھتے ہیں،سیاسی اور مذہبی جماعتوں کے دہشت گرد چوبیس گھنٹے مخالفین کا آسان ہدف تلاش کرتے گھوم رہے ہیں ،رپورٹ کے مطابق دہشت گرد اس تلاش میں ہیں کہ کہیں انہیں کوئی مخالف سکیورٹی کے بغیر دکھائی دے تو وہ انہیں فوری نشانہ بنا لیں،رپورٹ کے مطابق شہر کے مختلف علاقوں میں سیاسی، مذہبی اور کچھ کالعدم تنظیمیں ایک بار پھر سرگرم ہوچکی ہیں،تمام دہشت گردوں کو مقامی ہم خیال لوگوں کی مکمل سپورٹ حاصل ہے،شہر کی سیاسی اور مذہبی چودہ اہم شخصیات دہشت گردوں کے لئے آسان ہدف ہیں ،اہم شخصیات میں ایم کیو ایم کے چار رہنما ،جے یو آئی ف کے دو ، اے این پی کے دو جبکہ مسلم لیگ ن، جماعت اہلسنت، جے یو آئی (س)، سنی تحریک،اور علما کونسل کا ایک ایک رہنما شامل ہیں۔تاہم حساس اداروں کی رپورٹ کے بعد ان رہنمائوں کی سیکورٹی بڑھادی گئی ہے اور انہیں غیر ضروری نقل و حرکت سے بھی روک دیا گیا ہے۔ جبکہ انٹیلی جنس معلومات کی روشنی میں دہشت گردوں کے گرد بھی گھیرا تنگ کردیا ہے جو اہم شخصیات کو قتل کرنا چاہتے ہیں‘ پولیس ذرائع کے مطابق آئندہ چندروز میں اہم گرفتاریاں متوقع ہیں۔

Tags: