اربوں روپے کی کرپشن نیب کراچی کو شرجیل میمن سے تحقیقات کا اختیار مل گیا

October 17, 2015 3:25 pm0 commentsViews: 38

سرکاری اشتہاری پالیسی کے برعکس اخباروں اور جرائد کو سرکولیشن کا تعین کئے بغیر کروڑوں روپے کے اشتہارات دیئے گئے
شرجیل میمن نے سپرا کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اشتہاری ایجنسیوں کو سرکاری اشتہار جاری کرنے کی بھی منظوری دی‘ قومی احتساب بیورو
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) قومی احتساب بیورو (نیب) نے سندھ کے سینئر سیاستدان شرجیل انعام میمن کیخلاف مبینہ کرپشن وار 5 ارب 87 کروڑ 50 لاکھ روپے کی سرکاری رقم کے غلط استعمال کی تحقیقات کا اختیار نیب کراچی کو دے دیا ہے۔ دوسری طرف بیورو نے اسی کیس میں تین دیگر افراد کی کرپشن کی رقم واپس کرنے پر ان کے ساتھ پلی بار گین/ رقم کی رضاکارانہ واپسی کی منظوری دے دی ہے۔ اس سے اس بات کی تصدیق ہوگئی ہے کہ پی پی کے صوبائی وزیر کے خلاف کیس مضبوط ہے۔ اختیارات کے ناجائز استعمال اور اشتہارات کے بجٹ سے فنڈز میں خوردبرد کا کیس نیب ک ایگزیکو بورڈ کے اجلاس میں رکھا گیا تھا نیب کی انکوائری میں کہا گیا ہے ک محکمہ اطلاعات سندھ کے افسروں کی شکایات پر بورڈ نے یہ تحقیقات ڈی جی نیب( کراچی) کے سپرد کی تھی۔ تحقیقات کے دوران اس وقت کے وزیر اطلاعات سندھ شرجیل انعام میمن ملزم کے طور رپ سامنے آئے تھے۔ مزید برآں ملزمان میں سے ایک نے کرپشن کی رقم رضاکارانہ واپس کرنے کی راہ اپنائی تھی‘ نیب (کراچی) نے دوبارہ تحقیقات کی سفارش کی جبکہ رقم کی رضاکارانہ واپسی کی منظوری بھی دی تھی۔ نیب کے ایگزیکٹو بورڈ کی میٹنگ میں بتایا گیا کہ اب تک کی انکوائری کے نتائج کے مطابق سندھ پبلک پروکیورمنٹ رولز 2010 ء کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اشتہاری ایجنسیوں کے انتخاب کیلئے پری کوالیفیکیشن کی گئی۔ ڈائریکٹر انفارمیشن کی طر ف سے کی گئی انکوائری کے مطابق قواعد و ضوابط کو نظر انداز کرتے ہوئے نام نہاد پری کوالیفائیڈ ایجنسیوں کو ریلیز آرڈ جاری کئے گئے/ جاری کئے جارہے ہیں۔ اس وقت کے سیکریٹری ذوالفقار شلوانی جو خود اس مبینہ کرپشن میں ملوث تھے کی طرف سے اس پرکوئی کارروائی نہیں کی گئی ۔تحقیقات میں مزید انکشاف کیا گیا ہے کہ اشتہاری پالیسی2011 ء کی خلاف ورزی کرتے ہوئے اخباروں/ جرائد کوان کی سرکولیشن یا میرٹ کا تعین کئے بغیر اشتہارات جاری کئے جارہے تھے۔ اخبارات کو کروڑوں روپے کے ڈسپلے اشتہارتا جاری کئے گئے جبکہ معاملہ عوام کی آگاہی کے بجائے سیاسی یا ذاتی تشہیر کا تھا۔ یہ اشتہارات ایک سو اخبارات کو جاری کئے گئے جبکہ اشتہارات جاری کرنے کی اجازت دیتی ہے۔

Tags: