جیم مرچنٹس اینڈ جیولرز کے کوائف کی اسکروٹنی شروع

October 17, 2015 3:37 pm0 commentsViews: 19

جعلی دستاویزات کے ذریعے سونے کی ایکسپورٹ اور مس ڈیکلریشن کے تناظر میں اٹھایا گیا، چیئرمین حبیب الرحمن
کراچی( پ ر) آل پاکستان جیم مرچنٹس اینڈ جیولرز ایسوسی ایشن نے جعلی دستاویزات کے ذریعے سونے کی ایکسپورٹ اور بڑے پیمانے پر مس ڈکلریشن کے تناظر میں اپنے اراکین کے کوائف کی اسکروٹنی شروع کر دی ہے۔ تمام اراکین سے ان کے شناختی کارڈ کی نادرا سے تصدیق کے ساتھ بینک سرٹیفکیٹ اور این ٹی این طلب کیا جا رہا ہے۔ کمپنیوں کی رکنیت کیلئے تجویز اور تائید کنندگان کے کوائف کی بھی اسکروٹنی کی جائے گی۔ جن کمپنیوں کے کوائف کی تصدیق نہیں ہوگی ان کی رکنیت منسوخ کر دی جائے گی۔ آل پاکستان جیم مرچنٹس اینڈ جیولرز ایسوسی ایشن کے چیئر مین حبیب الرحمن کے مطابق کسٹم اور ایف آئی اے کے زیر تفتیش مقدمات میں جعلی دستاویزات کے ذریعے سونے کی ایکسپورٹ اور مس ڈکلریشن میں ملوث جعلی کمپنیوں کا معاملہ سامنے آنے کے بعد ایسوسی ایشن نے رکنیت سازی اور تجوید کیلئے اسکروٹنی کا عمل سخت کر دیا ہے ڈائریکٹر جنرل ٹریڈ آرگنائزیشن کے قواعد کے مطابق رکنیت سازی کیلئے صرف این ٹی این کی شرط لازم ہے تاہم ملک اور انڈسٹری کے مفاد میں نئی رکنیت سازی اور تجوید کیلئے اب این ٹی این کے ساتھ نادرا سے تصدیق شدہ شناختی کارڈ اور بینک سرٹیفکیٹ بھی طلب کیا جارہاہے انہوں نے کہا کہ ایسوسی ایشن نے ہمیشہ غلط اور غیر قانونی سرگرمیوں میں ملوث عناصر کی حوصلہ شکنی کی ہے اور2012ء کے وسط میں بھی ایسوسی ایشن نے ٹریڈ ڈیولپمنٹ اتھارٹی کو سونے کی ایکسپورٹ کیلئے ایس آر او 266 کے غلط استعمال کی نشاندہی کی تھی۔