مسلمان گائے کا گوشت چھوڑیں ورنہ بھارت چھوڑ دیں، وزیراعلیٰ ہریانہ

October 17, 2015 4:08 pm0 commentsViews: 42

مسلمان گائے کا گوشت نہ کھا کر بھی مسلمان رہیں گے، گائے ذبح کرنے پر پابندی حکومت کا بڑا کارنامہ ہے
مسلمان کا قتل غلط فہمی کا نتیجہ تھا، آزادی کی بھی ایک حد ہوتی ہے، منوہر لال کی ہٹ دھرمی
نئی دہلی( نیوز ڈیسک) بھارتی ریاست ہریانہ کے وزیراعلیٰ منوہر لال کھاتر نے کہا ہے کہ بھارت میں مسلمان گائے کا گوشت نہ کھا کر بھی مسلمان ہی رہیں گے۔ دادری واقعہ غلط فہمی کا نتیجہ تھا۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق بھارتی ریاست ہریانہ کے وزیراعلیٰ منوہر لال کھاتر نے کہا ہے کہ مسلمان گائے کا گوشت نہ کھا کر بھی مسلمان ہی رہیں گے‘ لہٰذا مسلمانوں کو اگر بھارت میں رہنا ہے تو گائے کا گوشت ہر صورت میں چھوڑنا ہوگا۔ انہوں نے کہا کہ گائے کو ذبح کرنے پر پابندی عائد کرنا بھارتی حکومت کا ایک بڑا کارنامہ ہے۔ ہریانہ کے وزیراعلیٰ نے اس بات کا بھی اعتراف کیا کہ دادری واقعے میں مسلمان شخص کا قتل غلط فہمی کانتیجہ تھا۔

گائے کے پجاریوں نے ایک اور مسلمان کی جان لے لی
شملہ میں 20 سالہ نعمان کو مویشی اسمگل کرنے کے الزام میں جنتادل کے غنڈوں شدید تشدد، موقع پر دم توڑ گیا
نوجوان کی شہادت کی خبر سہارن پور پہنچنے پر شہر میں ہنگامے پھوٹ پڑے، مشتعل مسلمانوں نے توڑ پھوڑ کرکے کئی گاڑیاں نذر آتش کردیں
نئی دہلی/ سہارن پور( مانیٹرنگ ڈیسک) بھارت کے انتہا پسند ہندئوں نے گائے کا گوشت اسمگل کرنے کے الزام میں ایک اور مسلمان کو بیدردی سے شہید کردیا۔ بھارتی میڈیا کے مطابق ٹرک ڈرائیور 20 سالہ نعمان پر گائے اور دیگر مویشیوں کی اسمگلنگ کا الزام تھا‘ اسے ہما چل پردیش کے شہر شملہ میں مشتعل جتنا دل کے ہندوئوں نے اذیتیں دے کر شہید کیا۔ نعمان کے قاتلوں پر کسی نے ہاتھ ڈالنے کی زحمت نہیں کی۔ نوجوان کی شہادت کی خبر سہارن پور پہنچنے پر شہر میں ہنگامے پھوٹ پڑے‘ مشتعل مسلمانوں نے سڑکوں پر آکر توڑ پھوڑ شروع کردی‘ متعدد گاڑیوں کو نذر آتش کرتے ہوئے ہر قسم کا ٹریفک معطل کردیا‘ بھارتی پولیس نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے آنسو گیس کی شیلنگ اور لاٹھی چارج کرتے ہوئے درجنوں کو گرفتار کرلیا۔

Tags: