ایئرپورٹس پر دہشت گردی کا منصوبہ 37 اہم ادارے دہشت گردوں کے نشانے پر ہیں

October 19, 2015 4:22 pm0 commentsViews: 25

کالعدم دہشت گرد تنظیمیں بڈھ بیرایئربیس کی طرح ملک کے دیگر ایئرپورٹس کو بھی نشانہ بنانے کی منصوبہ بندی کررہی ہیں
پاکستان میں آپریشن کے بعد دم توڑتی کالعدم تنظیموں نے متحد ہو کر ایک بار پھر بم دھماکوں اور خودکش حملوں کا منصوبہ بنایاہے، اس بار عوامی مقامات کے بجائے اہم حکومتی اداروں اور ہوائی اڈوں کو نشانہ بنانے کی تیاریاں کی جارہی ہیں
نیشنل اینٹی کائونٹرٹیررازم اتھارٹی نے وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو دہشت گردوں کے منصوبے سے آگاہ کردیا، کراچی میں مسرور ایئربیس، رینجرز ہیڈکوارٹرز، سی آئی ڈی آفس اور حساس علاقوں میں پولیس اسٹیشنوں کو نشانہ بنایاجاسکتاہے
کراچی( کرائم ڈیسک) کالعدم تنظیم  کے دہشت گردوں نے پاکستان کے مختلف ایئر پورٹس پر دہشت گردی کی منصوبہ بندی کر لی پولیس اور رینجرز کے دفاتر کو بھی نشانہ  بنایا جا سکتا ہے۔ سیکورٹی انتہائی سخت کرنے کیلئے مراسلہ ارسال کر دیا گیا۔ ذرائع کے مطابق نیشنل اینٹی کائونٹر ٹیررازم اتھارٹی ( نیکٹا) نے وفاقی و صوبائی37 اہم اداروں اور بعض ہوائی اڈوں کو کالعدم دہشت گرد تنظیم کی جانب سے تشدد کا نشانہ بنانے کا خدشہ ظاہر کرتے ہوئے چاروں صوبائی حکومتوں کو متعلقہ اداروں کی سیکورٹی سخت کرنے کے احکامات جاری کئے ہیں۔ ذرائع کے مطابق چاروں صوبوں کو لکھے گئے خط میں کہا گیا ہے کہ دہشت گرد بڈھ بیر ایئر بیس کی طرح مذکورہ اداروں کو نشانہ بنانے کی منصوبہ بندی کر رہے ہیں۔ وفاقی اور صوبائی حکومتوں کو ارسال کی جانے والی رپورٹ میں انکشاف کیا گیا ہے کہ پاکستان میں آپریشن شروع ہونے کے بعد دم توڑتی کالعدم تنظیموں نے متحد ہو کر بم دھماکوں اور خود کش حملوں کا منصوبہ بنایا گیا ہے اور اس بار عوامی مقامات کے بجائے اہم حکومتی اداروں اور ہوائی اڈوں کو نشانہ بنانے کی منصوبہ بندی کی گئی ہے۔ رپورٹ میں کراچی کے  مسرور ایئر بیس سمیت پشاور ایئر پورٹ، سیدو شریف ایئر پورٹ، سوات  بنوں ایئر پورٹ، پی اے ایف ایڈیشنل کمپلیکس بڈھ بیر، ایئر ہیڈ کوارٹر ز اسلام آباد ، کراچی ایوی ایشن سمیت راولپنڈی اور ایف آئی اے ہیڈ کوارٹر لاہور کو حساس قرار دیتے ہوئے ان پر حملوں کا اندیشہ ظاہر کیا گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق سندھ کے پی اے ایف مسرور بیس کراچی، پولیس اور رینجرز  اسٹیشن نزد بنوری ٹائون، سی آئی ڈی جمشید کوارٹر،اولڈ گولیمار رینجرز ہیڈ کوارٹر، نمبر فائیو رینجرز اسٹیشن، سی آئی ڈی اینڈ رینجرز ہیڈ کوارٹر کراچی، پولیس ٹریننگ اکیڈمی سعید آباد اور بلوچستان کے ریسر اسٹیشن پسنی، کنٹریکٹرز آف سینڈک پروجیکٹ، اچ گیس پائپ لائن پروجیکٹ جھٹ پٹ اور شکدر ڈیم پسنی کو ٹارگٹ کرنے کی پلاننگ کی جا رہی ہے۔ ذرائع کے مطابق نیشنل اینٹی کائونٹر ٹیرر ازم اتھارٹی نے حملہ کرنے والی کالعدم تنظیموں کے نام ظاہر نہیں کئے خط میں کہا گیا ہے کہ دہشت گرد کالعدم تنظیموں کی جانب سے ملک کے اہم اداروں کو نشانہ بنانے کا خدشہ ہے۔ ذرائع کے مطابق سیکریٹری داخلہ سندھ مختار سومرو نے ڈی جی رینجرز اور آئی جی سندھ پولیس کو متعلقہ  اداروں کی سیکورٹی سخت کرنے کیلئے خط لکھا ہے۔

Tags: