دس ماہ کے دوران داعش سے تعلق رکھنے والے 900 افراد گرفتار

October 19, 2015 4:30 pm0 commentsViews: 32

پاکستان میں عالمی دہشتگردتنظیم کے نیٹ ورک کی موجودگی پر وفاقی حکومت تذبذب کا شکار ہوگئی
سانحہ صفورا میں داعش کے ملوث ہونے کے ثبوت ملے ہیں‘ مرکزی کردار شام میں روپوش ہے‘ انٹیلی جنس ذرائع
اسلام آباد( آن لائن) پاکستان میں عالمی دہشت گرد تنظیم داعش نیٹ ورک کی موجودگی پر وفاقی حکومت تذبذب کا شکار ہوگئی۔ وزیر داخلہ سمیت اعلیٰ حکومتی عہدیداروں کے داعش کے موجودگی اور عدم موجودگی کے متضاد بیانات کے باوجود گزشتہ10 ماہ کے دوران مبینہ طور پر داعش سے تعلق رکھنے والے 900 افراد کو گرفتار کیا جا چکا ہے۔ سینیٹ کی داخلہ امور کمیٹی میں آئی جی سندھ نے اعتراف کیا کہ سانحہ صفورا میں عالمی دہشت گرد تنظیم داعش ملوث ہونے کے ثبوت ملے ہیں جبکہ مرکزی کردار بیرون ملک شام میں روپوش ہے۔ ذرائع کے مطابق وفاقی دار الحکومت سمیت سندھ میں داعش نیٹ ورک کی جانب سے متعدد بار وال چاکنگ کی گئی جس پر ملک بھر میں گرفتاریاں بھی کی گئی ہیں جن کی تعداد دس ماہ کے دوران نو سو بتائی جاتی ہے۔ ذرائع نے بتایا کہ تین ماہ قبل بین الاقوامی اسلامک یونیورسٹی اسلام آباد کیمپس سے داعش کے جھنڈے ، بینرز، سی ڈی سمیت دیگر مواد ملا تھا۔ جس پر سیکورٹی اداروں نے گرفتاریاں بھی کی تھیں۔ ذرائع کا کہنا  ہے وزیر اعظم پاکستان کی امریکی صدر کے ساتھ طے شدہ ملاقات میں عالمی دہشت گرد تنظیم داعش سے نمٹنے کیلئے پاکستانی فورس  کے  کامیاب آپریشن اور حکمت عملی پر بھی بات کئے جانے کا امکان ہے۔

Tags: