دوہرا نظام تعلیم پاکستانی معاشرے کی سب سے بڑی تقسیم ہے، شفیق پراچہ

October 20, 2015 3:46 pm0 commentsViews: 30

تشکیل پاکستان کا مقصد امیر و غریب کے امتیاز کو ختم کرنا تھا، نونہال اسمبلی سے سعدیہ راشد کا خطاب
کراچی( اسٹاف رپورٹر) سابق کمشنر کراچی اور سابق رجسٹرار سندھ ہائی کورٹ شفیق الرحمن پراچہ نے کہا ہے کہ دوہرا نظام اور معیاری زندگی پاکستانی معاشرے کے سب سے بڑی تقسیم ہے وہ گزشتہ روز پاکستان کیلئے جان بھی قربان، شہید ملت پاکستان ، کے موضوع پر ہمدرد نونہال اسمبلی کراچی کی تقریب سے ایک مقامی ہوٹل میں خطاب کر رہے تھے۔ انہوں نے مزید کہا کہ بقول قائد ملت لیاقت علی خان تشکیل پاکستان کا مقصد امیر و غریب کے امتیار کو ختم کرنا تھا یہی بات انہوں نے غیر منقسم ہندوستان کی عبوری حکومت میں بحیثیت وزیر خزانہ، غریبوں کا بجٹ پیش کرتے ہوئے کہی تھی لیکن پاکستان میں اعلیٰ طبقے کیلئے ایک نظام تعلیم اور متوسط طبقے کے لئے دوہرا نظام تعلیم جاری رکھ کر غریب و امیر کے فرق کو مزید بڑھا دیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ جب ہندوستان میں تاج محل بن رہا تھا اسی وقت انگلستان میں آکسفورڈ یونیورسٹی تعمیر کی جا رہی تھی۔ انہوں نے کہا کہ شہید حکیم محمد سعید نے تو فروغ علم و تعلیم کیلئے علم کا ایک شہر، مدینتہ الحکمت تعمیر کر دیا، جہاں اسکولز کا لجز اور جامعہ ہمدرد چل رہی ہے۔ محترمہ سعدیہ راش نے کہا کہ امن کی آزادی اور ترقی قربانی چاہتی ہے۔ جو ہر ایک کو دینی ہوتی ہے۔

Tags: