ایس ایس پی ملیر سمیت4پولیس افسران پرحملوں کا خطرہ

October 21, 2015 3:24 pm0 commentsViews: 19

حساس اداروں نے حملوں کے خطرے کے باعث پولیس افسران کی نقل و حمل محدود کرنے اور سیکورٹی انتظامات کی ہدایت جاری کردی
لشکر جھنگوی، تحریک طالبان اور القاعدہ سمیت دیگر کالعدم تنظیموں کے ارکان نے گٹھ جوڑ کرلیا ہے، ذرائع کا دعویٰ
کراچی( کرائم رپورٹر) ایس آئی یو ‘ سی ٹی ڈی اور ضلع ملیر کے سابق ایس ایس پی سمیت4 افسران پر حملوں کے خدشات کے پیش نظر ان کی نقل و حرکت محدود کرنے اور سیکورٹی انتظامات بڑھانے کی ہدایت جاری کردی گئی۔ تفصیلات کے مطابق حساس اداروں کی جانب سے ایک مراسلہ جاری کیا گیا ہے جس میں خدشہ ظاہر کیا گیا ہے کہ کالعدم تنظیم کے ارکان کی جانب سے سندھ پولیس کے4 افسران سابق ایس ایس پی ملیر رائو انوار ‘راجہ عمر خطاب‘ فاروق اعوان اور مظہر مشوانی کونشانہ بنایا جاسکتا ہے‘ ذرائع کا کہناہے کہ کالعدم تنظیموںکے ارکان جو کہ آپس میں گٹھ جوڑ کئے ہوئے ہیں‘ نشانہ بناسکتے ہیں۔ واضح رہے کہ مذکوہ افسران جن پر حملوں کا خدشہ ظاہر کیا گیا ہے وہ کالعدم تنظیموں کے بے شمار کارندوں کو مقابلوں میں ہلاک یا پھر گرفتار کرچکے ہیں۔ یاد رہے کہ ایس ایس پی رائو انوار پر کئی حملے ہوچکے ہیں اور فاروق اعوان بھی ایک حملے میں خوش قسمتی سے محفوظ رہے ہیں۔

Tags: