راحت فتح علی، عاطف اسلم اور علی ظفر کے شوز منسوخ

October 21, 2015 3:59 pm0 commentsViews: 38

پاکستانی فنکاروں نے شیو سینا کی دھمکیوں کے بعد دورے منسوخ کردیے
ٹیلی ویژن اور فلموں کے متعدد اداکار بھارت جا کر کام کررہے تھے، بہت سے گلوکار اپنے کنسرٹ کے لیے بھات جانا چاہتے تھے
پاکستانی اداکار فواد خان اور مائرہ خان کو بھی دھمکیاں دی گئی ہیں جو بہت سی بھارتی فلموں میں کام کررہے ہیں
بھارتی ریاست مہاراشٹر کی سرزمین پر کسی پاکستانی فنکار یا کرکٹر کو نہیں آنے دیں گے، شیوسینا کے جنرل سیکریٹری کا اعلان
کراچی( نیٹ نیوز/ مانیٹرنگ ڈیسک) بھارتی ہندو انتہا پسند تنظیم شیو سینا کی جانب سے پاکستانی فنکاروں کو دی جانے والی دھمکیوں کے بعد بھارت میں جا کر کام کرنیوالے پاکستانی فنکار عدم تحفظ کی وجہ سے تشویش میں مبتلا ہوگئے۔ متعدد پاکستانی اداکارہ ٹیلی ویژن اور فلموں میں کام کر رہے ہیں جبکہ بہت سے فنکار جو اسٹیج شو میوزک کنسرٹ کی وجہ سے بھارت جانا چاہتے تھے نے اپنا دورہ منسوخ کر دیا۔ گزشتہ چند دنوں سے بھارتی ہندو انتہا پسند تنظیم شیو سینا کو پاکستانی فنکاروں کو دھمکی دے رہی ہے کہ وہ بھارت آکر کام نہ کریں ورنہ انہیں نقصان اٹھانا پڑے گا۔ اس سے قبل علی ظفر، عاطف اسلم، راحت فتح علی خان، شکیل صدیقی اور دیگر فنکار بھی بھارتی انتہا پسند تنظیم کی جانب سے حملوں کی وجہ سے بھارت میں شوز نہ کر سکے۔ پاکستانی اداکارائوں کو ممبئی میںفلموں کی پروموشن نہیں کرنے دی جائے گی۔ شیو سینا کے فلم ونگ چترا پتا سینا کے جنرل سیکریٹری اکشش بردا پر کو کا کہنا ہے کہ ہم بھارتی ریاست مہاراشٹر کی سر زمین پر کسی پاکستانی اداکار، کرکٹر یا فنکار کو نہیں آنے دیں گے۔ ہمیں اس بات کی پرواہ نہیں کہ ان پاکستانیوں کو اپنی فلموں میں کون سائن کر رہا ہے۔ کرن جوہر، فرحان اختر، شاہ رخ خان، وغیرہ ذمہ دار شہری ہیں اور انہیں پاکستانیوں کو اپنی فلموں میں کاسٹ نہیں کرنا چاہئے۔ دریں اثناء بھارت کی مسلمان اداکارہ عرشی خان بھی شیو سینا کی انتظامی کارروائیوں کے سامنے ڈٹ گئیں۔ کہتی ہیں کہ شیو سینا میں ہمت ہے تو سامنے آئے۔ عرشی خان نے ایک ٹوئیٹر پیغام میں لکھا ہے کہ وہ پاکستان کی حمایت کرتی ہیں۔ شیو سینا میں ہمت ہے تو آئے اور ان کا منہ سیاہی سے کالا کرے۔

Tags: