مختلف جیلوں میں10 مجرموں کو پھانسی، تین کی سزائے موت رک گئی

October 21, 2015 3:59 pm0 commentsViews: 25

پھانسی کے وقت سیکورٹی کے سخت اقدامات، لاشیں ورثاء کے حوالے کر دی گئیں
لاہور/ بہاولپور( آئی این پی) لاہور، فیصل آباد، اٹک، قصور، سرگودھا اور بہاولپور کی جیلوں میں سزائے موت کے10 مجرموں کو تختہ دار پر لٹکا دیا گیا۔ پھانسی پر سیکورٹی کے سخت انتظامات کئے گئے تھے جبکہ سزائے موت پر عملدر آمد کے بعد لاشیں ورثاء کے حوالے کر دی گئیں۔ ملتان، بہاولپور اور فیصل آباد میں قتل کے3 مجرموں کی پھانسیاں روک دی گئیں۔ میڈیا رپورٹوںکے مطابق کوٹ لکھپت جیل لاہور میں سزائے موت پانے والے مجرم خلیل احمد نے2001ء میں نواں کوٹ میں پرویز نامی شخص کو قتل کر دیا تھا۔ سینٹرل جیل فیصل آباد میں تختہ دار پر لٹکائے جانے والے مجرم سعید نے 2003ء میں ایک شخص کو قتل کر دیا تھا مجرم اکرم نے ایک شخص کو قتل کر دیا تھا۔ اٹک ڈسٹرکٹ جیل میں پھانسی پر لٹکائے جانے والے مجرم علیق شاہ نے2001ء میں صواتی میں2 افراد کو فائرنگ کرکے قتل کر دیا تھا، امجد علی نے 2002ء میں فتح جنگ میں رشتے کے تنازعے پر چچا اور چچی کو قتل کریا تھا۔ محمد بشیر نے1998ء میں رنجش پر دوست کو قتل کر دیا تھا۔ ڈسٹرکٹ جیل قصور میں سزائے موت پانے والے مجرم خلیل نے2002ء لاہور میں ہیڈ ماسٹر جاوید اقبال پر پیٹرول چھڑک کر زندہ جلا دیا تھا۔ سرگودھا ڈسٹرکٹ جیل میں تختہ دار پر لٹکائے جانے والے مجرم فاروق نے 2003 ء میں دشمنی پر ایک شخص کو قتل کر دیا تھا۔ بہاولپور نیو سینٹرل جیل میں سزائے موت پانے والے مجرم مصطفیٰ نے ایک شخص کو قتل کردیا تھا۔

Tags: