کراچی میں فراہمی و نکاسی آب میں کوتاہی برداشت نہیں کی جائیگی، وزیربلدیات

October 21, 2015 4:22 pm0 commentsViews: 22

کسی گائوں یا گوٹھ کی لیز منسوخ کرنے کی خبروں میں صداقت نہیں، پیپلزپارٹی کسی کو بے یارومددگار یا بے گھر نہیں کرے گی، ناصر حسین شاہ
کرپشن پر کسی افسر کو ہٹایاجائے تو عدالتیں حکم امتناع دے دیتی ہیں، ججز سے ملاقات کرکے حقائق سے آگاہ کیاجائے گا، پریس کانفرنس
کراچی (سٹی رپورٹر) وزیر بلدیات سندھ سید ناصر حسین شاہ نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کسی کو بے روزگار یا بے گھر نہیں کرے گی اور نہ ہی کسی گائوں یا گوٹھ کی کوئی لیز منسوخ کی گئی ہے۔ محکمہ بلدیات کے ماتحت اداروں واٹر بورڈ، کے ایم سی اور ڈی ایم سیز میں موجود جرائم پیشہ عناصر کے خلاف محکمہ ذاتی کارروائیوں کا آغاز کردیا گیا ہے۔ ملیر 15 نمبرپل کا افتتاح15 یا 16 نومبر کو کردیا جائے گا۔ واٹر بورڈ، کے ایم سی اور سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے مابین بیٹر مین چارجز کے مسئلہ کے حل کے لئے سیکرٹری بلدیات کو ہدایات جاری کردی گئی ہیں۔ ایم نائن منصوبہ سابق صدر آصف علی زرداری کے دور حکومت میں بنایا گیا تھا اور اب اس پر کام کا آغاز کیا گیا ہے۔ بلدیاتی انتخابات میں منتخب نمائندوںکو مزید اختیارات دئیے جائیں گے۔ کسی افسر کو کرپشن یا سپریم کورٹ کی ہدایات کی روشنی میں ہٹایا جاتا ہے تو ماتحت عدالتیں اس پر اسٹے آرڈر دے دیتی ہیں، جس پر ان عدالتوں کے ججز سے ملاقات کرکے انہیں حقائق سے آگاہ کیا جائے گا۔ کراچی سمیت سندھ بھر میں ’’کلین سیٹیز‘‘ نامی مہم کا آغاز کیا جارہا ہے اور سندھ سولڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ کے تحت کراچی کی مختلف ڈی ایم سیز میں ٹینڈرز کے کام کا آغاز کردیا گیا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے منگل کے روز کراچی واٹر اینڈ سیوریج بورڈ کے مرکزی دفتر میں منعقدہ پریس کانفرنس کے دوران کیا۔ اس موقع پر ایم ڈی واٹر بورڈ مصباح الدین فرید، وائس چیئرمین واٹر بورڈ ساجد جوکھیو، ایڈمنسٹریٹر کراچی سجاد عباسی، ڈی جی ٹیکنکل سروسز نیاز سومرو اور دیگر بھی ان کے ہمراہ موجود تھے۔ قبل ازیں صوبائی وزیر نے واٹر بورڈ اور بعد ازاں کراچی کے تمام اضلاع کے ایڈمنسٹریٹرز کے دو مختلف اجلاس کی صدارت کی اور ان اجلاس میں انہوں نے شہر میں پانی، سیوریج، صفائی ستھرائی سمیت اشیوز پر ان سے تفصیلی بریفنگ لی۔ صوبائی وزیر سید ناصر حسین شاہ نے اجلاس میں تمام ڈی ایم سیز کے ایڈمنسٹریٹرز اور واٹر بورڈ کے چیف انجینئرزکو ہدایات دیں کہ شہر میں صفائی ستھرائی اور بالخصوص پانی کے ترسیلی نظام اور سیوریج کے نظام میں کسی قسم کی کوئی کوتاہی کو اب برداشت نہیں کیا جائے گا اور جو بھی افسر اس میں ناکام رہا اس کے خلاف سخت سے سخت کارروائی کی جائے گی۔ بعد ازاں پریس کانفرنس کرتے ہوئے سید ناصر حسین شاہ نے کہا کہ آج محکمہ بلدیات کے ماتحت اداروں واٹر بورڈ اور کے ایم سی اور ڈی ایم سیز کے ایڈمنسٹریز سے اجلاس کے دوران ان اداروں کی کارروائیوں اور اس حوالے سے عوامی شکایات کے حوالے سے تفصیلی بات چیت کی گئی ہے اور محرم الحرام کے شروع ہوتے ہی شہر بھر میں صفائی ستھرائی سمیت دیگر اشوز کے حل کے لئے کاموں کا آغاز کردیا گیا ہے اور ان تمام افسران کو ہدایات جاری کردی گئی ہیں کہ اس سلسلے کو تواتر کے ساتھ جاری رکھا جائے۔ واٹر بورڈ کے کروڑوں روپے کے ایم سی پر واجبات کے سوال کے جواب میں صوبائی وزیر نے کہا کہ اس سلسلے میں سیکرٹری بلدیات کو ہدایات دی گئی ہیں کہ وہ کے ایم سی، واٹر بورڈ اور سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے مابین بیٹر مین چارجز کے معاملے کو ترجیحی بنیادوں پر حل کروائیں۔

Tags: