امریکا میں حکومت مخالف مظاہروں پر وزیراعظم کی ناراضگی

October 26, 2015 5:23 pm0 commentsViews: 23

وفاقی حکومت اور متحدہ میں فاصلے پھر بڑھ گئے، معاملات التواء کا شکار ہونے کا امکان
وزیراعظم نوازشریف کی واشنگٹن آمد کے موقع پر ایم کیو ایم کے مظاہروںمیں نوازشریف اور حکومت کے خلاف نعرے بازی کی گئی تھی
متحدہ کے ارکان پارلیمنٹ کے استعفوں کی واپسی اور شکایات ازالہ کمیٹی بنانے کے باوجود مظاہرے کیے گئے، وزیراعظم نے اسحق ڈار کو کھری کھری سنادیں
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) وزیر اعظم نواز شریف نے حالیہ دورہ امریکا کے دوران متحدہ قومی موومنٹ( ایم کیو ایم ) کے کارکنوں کی جانب سے حکومت مخالف مظاہرے پر وزیر اعظم کا سخت اظہار ناراضگی، وفاقی حکومت اور ایم کیو ایم میں فاصلے بڑھ گئے متحدہ سے طے پانے والے معاملات ایک بار پھر التوا کا شکار ہونے کا امکان ہے۔ اتوار کو ذمہ دار ذرائع نے بتایا کہ وزیر اعظم محمد نواز شریف کی واشنگٹن آمد پر متحدہ کے کارکنوں کی طرف سے حکومت مخالف مظاہرے کے دوران وزیر اعظم نواز شریف اور حکومت کے خلاف کی جانے والی نعرے بازی پر وزیر اعظم نواز شریف نے اس دورے میں اپنے ہمراہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار سے اس بات پر سخت برہمی کا اظہار کیا ۔ ذرائع کے مطابق وزیر اعظم نے اسحاق ڈار سے کہا کہ آپ نے متحدہ کے ارکان پارلیمنٹ کے استعفوں کی واپسی اور شکایات کے ازالے کیلئے کمیٹی بنوائی تاہم اس کے باوجود متحدہ نے ایک ایسے موقع پر جب قومی اتحاد کا پیغام جانا چاہئے تھا امریکا میں حکومت مخالف مظاہرے کرکے منفی پیغام دیا ہے ذرائع کے مطابق وزیر اعظم کی طرف سے اظہار ناراضگی پر اسحاق ڈار نے واشنگٹن سے لندن اور کراچی میں متحدہ کے بعض رہنمائوں کو اس بارے میں سخت الفاظ میں اپنے جذبات کا اظہار کیا۔ ذرائع کے مطابق متحدہ کے حکومت مخالف مظاہرے کے بعد ایک بار پھر دونوں جماعتوں کی قیادت میں تلخی پیدا ہوگئی ہے اور فاصلے بڑھ گئے ہیں موجودہ صورتحال میں طے پانے والے کئی معاملات التوا کا شکار ہو سکتے ہیں۔

Tags: