خوفناک زلزلے کے بعد بلوچستان اور کراچی میں سونامی کا خطرہ

October 27, 2015 1:59 pm0 commentsViews: 97

پولیس اہلکار اپنے ساتھی کی پستول چیک کررہا تھا کہ اچانک گولی چل گئی، لوگوں میں بھگدڑ مچ گئیپاکستان کے مختلف شہروں میں آئندہ چوبیس گھنٹوں میں مزید آفٹرشاکس کا خطرہ ہے، لوگوں کو ہنگامی صورتحال سے نمٹنے کیلئے تیا ررہنے کی ہدایت
مکران کوسٹل زون کے قریب زمین کی تین پلیٹیں ہل رہی ہیں جس سے سونامی کا خطرہ ہے، اثرات کراچی پر پڑ سکتے ہیں اور بھاری جانی و مالی نقصان ہوسکتا ہے، میٹ آفیسر طارق ابراہیم کی میڈیا سے بات چیت
زلزلہ آنے کے بعداب تک 13آفٹرشاکس ریکارڈ کیے جاچکے ہیں، ملک کے بالائی علاقوں میں زلزلہ آنے کے بعد پی ڈی ایم اے سندھ نے صوبے کے تمام کمشنرز کو ہائی الرٹ لیٹر جاری کردیا، حفاظتی اقدامات کرنے کی ہدایت
کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان کے مختلف شہروں میں خوفناک زلزلہ آنے کے بعد آئندہ24 گھنٹوں میں مزید آفٹر شاکس آنے کے خدشات ہیں جبکہ بلوچستان اور کراچی میں سونامی آنے کا خطرہ بھی ہے۔ جس سے بڑے پیمانے پر جانی و مالی نقصان ہو سکتا ہے۔ ماہرین نے اس حوالے سے حکومت کو حفاظتی اقدامات کرنے کا مشورہ دیا ہے۔ میٹ آفیسر طارق ابراہیم کا کہنا ہے کہ زلزلے کے باعث کراچی سمیت پاکستان کی تمام کوسٹل بیلٹ پر سونامی کا خطرہ پیدا ہوگیا ہے۔ مکران کوسٹل زون کے قریب زمین کی تین پلیٹیں ہل رہی ہیں اس لئے مکران زون میں8.1 شدت کے زلزلے سے سونامی کے امکانات پیدا ہوگئے ہیں۔ جس کے اثرات کراچی پر بھی پڑ سکتے ہیں۔ ماہرین نے ملک بھر میں آنے والے شدید ترین زلزلے کے بعد آفٹر شاکس کی پیشگوئی کر دی۔ محکمہ موسمیات کے ماہرین کے مطابق زلزلے کے آفٹر شاکس آنے کی قوی امید ہے اور لوگوں کو ہدایت کی گئی ہے کہ وہ ہنگامی صورتحال کیلئے تیار رہیں ماہرین کا کہنا ہے کہ زلزلے کی صورت میں گھروں میں رہنے کے بجائے کھلی جگہوں پر اور کھلے میدانوں میں پناہ لیں اور گھروں کے اندر رہنے سے گریز کریں۔ ماہرین محکمہ موسمیات کے مطابق زلزلے کے آفٹر شاکس کا سلسلہ مزید تین روز تک جاری رہنے کا امکان ہے۔ علاوہ ازیں خوفناک زلزلے کے بعد سے گزشتہ شب تک13 آفٹر شاکس ریکارڈ کئے گئے۔ آفٹر شاکس کی ریکٹر اسکیل پر شدت 3.3، 4.5 اور 5.3 تک رہی۔ نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی نے آئندہ 24 گھنٹوں کے دوران مزید آفٹر شاکس کا خدشہ ظاہر کیا ہے اور اس سلسلے میں متعلقہ اداروں اور شہریوں کو محتاط رہنے کی تلقین کی گئی ہے۔ نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی کے ترجمان ریما زبیری کا کہنا ہے کہ آئندہ چوبیس گھنٹوں میں مزید جھٹکے محسوس کئے جا سکتے ہیں جس سے لوگوں کو خبر دا رہنا چاہئے۔ انہوں نے لوگوں سے کہا کہ وہ نقصانات سے بچنے کیلئے خصوصی انتظامات پر توجہ دیں۔ دوسری جانب ملک کے بالائی علاقوں میں زلزلے کے بعد پی ڈی ایم اے سندھ نے صوبے کے تمام کمشنر کو ہائی الرٹ لیٹر جاری کر دیا ہے پی ڈی ایم اے کے مطابق زلزلے کے فوری بعد این ڈی ایم اے کی جانب سے موصولہ ہدایت کی روشنی میں کمشنر کراچی، لاڑکانہ ، میر پور خاص، سکھر، حیدر آباد، اور شہید بے نظیر آباد کو ہدایت کی گئی ہے کہ زلزلے کے باعث آفٹر شاکس کے امکانات ہیں۔ جس کے لئے تمام اسپتالوں سمیت ضلعی انتظامیہ کو متحرک رکھا جائے اور ایسے تمام حفاظتی اقدامات کئے جائیں جس سے انسانی جانوں کے زیاں سے بچا جا سکے۔ محکمہ موسمیات کا کہنا ہے کہ زلزلے کے بعد کے جھٹکے ( آفٹر شاکس ) دو ہفتے تک جاری رہ سکتے ہیں لہٰذا نقصان سے بچنے کے لئے زلزلے سے جن عمارتوں کو نقصان پہنچا ہے انہیں خالی کر دینا چاہئے کیونکہ آفٹر شاکس کی صورت میں ان کے گرنے کا خدشہ رہتا ہے۔

Tags: