سندھ پر پنجاب کی دہشت گرد نرسریوں سے حملے ہو رہے ہیں، خورشید شاہ

October 27, 2015 2:20 pm0 commentsViews: 21

پہلے سانحہ شکار پور اور اب جیکب آباد میں دہشت گردی کی واردات ہوئی
سندھ حکومت کو ایجنسیوں کے ساتھ مل کر دہشت گردی کو روکنا ہوگا، اپوزیشن لیڈر
جیکب آباد( نیوز ڈیسک) قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف سید خورشید شاہ نے کہا ہے کہ دہشت گردی پاکستان کا بہت بڑا مسئلہ ہے جس کا ہم 2008 سے مقابلہ کررہے ہیں‘ دہشت گردوں کیخلاف آپریشن ضرب عضب جاری ہے‘ اس سے پہلے بھی سوات‘ فاٹا اور وزیرستان سمیت دیگر علاقوں میں واقعات رونما ہورہے ہیں‘ ہم سب کو مل کر اس مسئلے کو حل کرنا ہوگا‘ ان خیالات کااظہار انہوں نے سانحہ جیکب آباد میں شہید ہونیوالے شہداء کے ورثاء سے تعزیت کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ پیپلز پارٹی کے دور میں جب ایسے حالات ہوتے تھے تو پارلیمنٹ کے اندر اور باہر تمام سیاسی جماعتوں کے ساتھ مل کر مسئلے کا حل نکالتے تھے‘ اب ایسے حالات ہیں کہ حکومت کو مل کر کوشش کرنی چاہئے اورراستہ ڈھونڈنا چاہئے‘ انہوں نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ آپریشن ضرب عضب کے بعد کافی حد تک دہشت گردی کا خاتمہ ہوا ہے۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب میں دہشت گردوں کی بڑی نرسریاںجنم لے رہی ہیں‘ وہاں سے ہی سندھ کے مختلف حصوں میں مسلسل حملے ہورہے ہیں ‘اس سے پہلے سانحہ شکار پور اور اب جیکب آباد میں ہوا ہے‘ یہ سارا علاقہ دہشت گردی کی زد میں آرہا ہے‘ حکومت کو اس پر توجہ دینی چاہئے‘ حکومت سندھ کے جو وسائل ہیں وہ کوشش کررہی ہے‘سندھ حکومت کو ایجنسیوں کے ساتھ ملکر دہشت گردی کو روکنا ہوگا۔

Tags: