ملک میں مزید زلزلوں کا خدشہ کراچی‘ اسلام آباد‘ کوئٹہ‘ پشاور‘ لاہور کوخطرات لاحق

October 28, 2015 1:38 pm0 commentsViews: 23

پورشین پلیٹیں‘ انڈین پلیٹوں کے نیچے گھسنے کی کوشش کررہی ہیں جس کی وجہ سے آئندہ 10سے15 برسوں میں7 سے 8 شدید ترین زلرلے آسکتے ہیں
سب سے زیادہ خطرناک مکران زون ہے جو سمندر کے اندر سے گذر رہا ہے جس کے باعث سونامی کے خطرات پیدا ہورہے ہیں‘ ماہر ارضیات
کراچی( اسٹاف رپورٹر) ممتاز ماہر ارضیات پروفیسر عبدالرزاق میمن نے کہا ہے کہ پورشین پلیٹیں انڈین پلیٹوں کے نیچے گھسنے کی کوشش کررہی ہیں جس کی وجہ سے ملک کے اندر کچھ عرصے سے تواتر کے ساتھ زلزلے آرہے ہیں‘ آئندہ 10سے15 برسوں میں مزید 7سے8 شدید ترین زلزلے آسکتے ہیں‘ ان زلزلوں سے لاہور‘ ملتان‘ اسلام آباد‘ پشاور‘ کوئٹہ اور کراچی کو غیر معمولی خطرات لاحق ہیں کیوں کہ خیبر پختونخوا اور بلوچستان کے علاقے پورشین پلیٹوں پر ہیں جبکہ پنجاب اور سندھ کے علاقے انڈین پلیٹوں پر واقع ہیں‘ سمندری ہوائوں کے نتیجے میں اٹھنے والے بادلوں کے زور سے سبڈیکشن زون میں زلزلے پیدا ہورہے ہیں ‘سب سے خطرناک مکران سبڈیکشن زون ہے جو سمندر کے اندر سے گزررہا ہے جس سے کراچی اور بلوچستان پر سونامی کے خطرات بھی منڈلارہے ہیں۔

خضدار‘ مالاکنڈ‘ راولپنڈی اور سوات میں زلزلے کے مزید جھٹکے
کوئٹہ اور مینگورہ میں بھی آفٹر شاکس کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری رہا‘ لوگ گھبرا کر گھروں سے باہر نکل آئے
ملک کے مختلف شہروں میں آنے والے خوفناک زلزلے کے بعد اب تک 23 آفٹر شاکس ریکارڈ کئے جاچکے ہیں
اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) خضدار‘ مالا کنڈ‘ راولپنڈی‘ سوات اور گرد و نواح میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے‘ زلزلے کا مرکز کوہ ہندوکش اور گہرائی 173 کلو میٹر تھی‘ مینگورہ میں بھی آفٹر شاکس کا سلسلہ وقفے وقفے سے جاری رہا‘ اس کے علاوہ وادی کوئٹہ میں زلزلے کے جھٹکے محسوس کئے گئے ہیں جس سے علاقہ میں خوف و ہراس پھیل گیا اور لوگ کلمہ طیبہ اور درود شریف کا ورد کرتے ہوئے گھروں سے باہر نکل آئے‘ زلزلہ مرکز کے مطابق ریکٹر اسکیل پر زلزلے کی شدت4.2 ریکارڈ کی گئی ملک کے مختلف علاقوں میں آنیوالے ہولناک زلزلے کے بعد سے اب تک 23 آفٹر شاکس ریکارڈ کئے جاچکا ہیں۔ محکمہ موسمیات کے مطابق زلزلے سے متاثرہ علاقوں میں آنیوالے آفٹر شاکس کی زیادہ سے زیادہ شدت5.3ریکارڈ کی گئی‘ کم سے کم شدت3.5رہی‘ علاوہ ازیں راولپنڈی میں زلزلے کے بعد آفٹر شاکس کا سلسلہ جاری رہا جس سے کٹاریاں کے علاقے میں مکان کی چھت گر گئی‘ ٹی ایم اے نے اندرون شہر کی14 عمارتیں خطرناک قرار دے دیں‘ گلگت بلتستان میں زلزلے کے آفٹر شاکس کے پیش نظر تعلیمی ادارے بند کردیئے گئے‘ لینڈ سلائیڈنگ کے باعث سڑکیں بند ہونے سے دیگر علاقوں سے زمینی رابطہ منقطع ہے بعض اسکولوں کی عمارتوںمیں شدید دراڑیںبھی آگئیں۔ گزشتہ روز کے زلزلے کے بعد اب تک 23 آفٹر شاکس آچکے ہیں سب سے زیادہ شدت والا آفٹر شاکس ریکٹر اسکیل پر5.3 ریکارڈ کیا گیا‘ کچھ مقامات سے نقصانات کی بھی اطلاعات ملی ہیں‘ آئندہ تین سے چار روز کے دوران مزید آفٹرشاکس آنے کے امکانات ہیں جبکہ ان آفٹر شاکس کی شدت گزشتہ روز آنیوالے زلزلے سے زیادہ نہیں ہوگی۔

Tags: