زلزلہ متاثرین کو امدادی پیکیج دینگے‘ وزیراعظم

October 28, 2015 1:38 pm0 commentsViews: 34

حکومت زلزلے سے متاثرہ افراد کی بحالی کیلئے مطلوبہ صلاحیت رکھتی ہے مصیبت کی گھڑی میں ہم وطنوں کو تنہا نہیں چھوڑیں گے
متاثرہ افراد کے نقصانات کا اندازہ لگاکر انہیں معاوضہ دیا جائیگا‘ تاکہ وہ دوبارہ اپنے گھر تعمیر کرسکیں
اسلام آباد/ شانگلہ( اے پی پی) وزیر اعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ حکومت زلزلہ متاثرین کی مدد کیلئے کوئی کسر اٹھا نہ رکھے گی۔ ریاستی وسائل کو بھر پور انداز میں بروائے کار لایا جائے گا۔ زلزلہ متاثرین کو امدادی پیکج دیا جائے گا۔ انہوں نے یہ بات ملک کے مختلف حصوں میں آنے والے زلزلے کے بعد نقصانات اور امدادی سرگرمیوں کا جائزہ لینے کے لئے منگل کو وزیر اعظم ہائوس میں اعلیٰ سطح کے اجلاس میں کہی۔ وزیر اعظم نے کہا کہ حکومت زلزلے سے متاثر ہونے والوں کو فوری امداد اور بحالی کی مطلوبہ صلاحیت رکھتی ہے اور مصیبت کی اس گھڑی میں اپنے ہم وطنوں کی مدد کیلئے ہر کاوش بروئے کار لائی جائے گی۔ انہوں نے کہا کہ حکومت متعلقہ حکام کی طرف سے جامع جائزہ رپورٹوں کے بعد زلزلے کے متاثرین کیلئے امدادی پیکج کا اعلان کرے گی۔ وزیر اعظم نے قدرتی آفت کے بعد پاک فوج، نیشنل ہائی وے اتھارٹی، نیشنل ڈیزاسٹر منیجمنٹ اتھارٹی اور صوبائی ڈیزاسٹر منیجمنٹ ارتھارٹیز ، کے فوری رد عمل اور کاوشوں کو سراہا۔ این ڈی ایم اے کے چیئر مین اور ڈی جی ایم نے وزیر اعظم کو زلزلے سے نقصانات کے بارے میں آگاہ کیا وزیر اعظم کو بتایا گیا کہ این ایچ اے نے تمام اہم شاہراہوں کو کھول دیا ہے اور بقیہ سڑکوں کو کلیئر کرنے کیلئے موثر انداز میں کام جاری ہے۔ وزیر اعظم کو یہ بھی بتایا گیا کہ زلزلے سے228قیمتی جانوں کا ضیاع ہوا جبکہ 620افراد زخمی ہوئے اور3320 مکانات کو نقصان پہنچا۔ اجلاس میں وزیر خزانہ اسحاق ڈار وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان، وزیر اطلاعات پرویز رشید گورنر کے پی کے سردار مہتاب احمد خان، چیف آف آرمی اسٹاف راحیل شریف، ڈی جی آئی ایس پی آر لیفٹیننٹ جنرل عاصم سلیم باجوہ، ڈی جی ایم او میجرجنرل ساحر شمشاد مرزا، چیئر مین این ڈی ایم اے میجر جنرل اصغر نواز اور دیگر سینئر حکام نے شرکت کی۔ دریں اثناء منگل کو شانگلہ میں متاثرہ علاقوں کے دورے کے موقع پر گفتگو کرتے ہوئے وزیر اعظم محمد نواز شریف نے کہا کہ زلزلہ متاثرین سے دلی ہمدردی ہے۔ متاثرین کیلئے مشاورت سے پیکج کا اعلان جلد ہی کیا جائے گا۔ ان کے نقصان کا صحیح معاوضہ دیا جائے گا تا کہ پھر اپنے گھر دوبارہ تعمیر کر سکیں۔ بحالی کا کام مکمل ہونے تک متاثرہ علاقوں کے دورے جاری رکھوں گا۔

Tags: