اسکولوں کے اساتذہ کی تنظیموں پرپابندی کا فیصلہ،تعلیم لازمی سروس ہوگی

October 29, 2015 3:29 pm0 commentsViews: 29

غیرقانونی تعیناتیوں اور ترقیوں میں ملوث افراد سے وصولیاں کی جائیں گی اور مقدمات بھی درج کیے جائیںگے، وزیراعلیٰ
اسکولوں میں بائیومیٹرک سسٹم متعارف کرایا ہے جس سے حاضری کی تصدیق اور مانیٹرنگ ہوسکے گی، سیکریٹری تعلیم کی بریفنگ
کراچی( اسٹاف رپورٹر) سندھ حکومت تعلیم کو لازمی سروس قرار دینے کے سلسلے میں سنجیدگی سے کوشاں ہے تا کہ اسکولوں میں ٹیچنگ اسٹاف کی کارکردگی مزید بہتر اور مستحکم ہو سکے لہٰذا اس حوالے سے اساتذہ یونینز کی سرگرمیوں پر پابندی عائد کی جا رہی ہے۔ اس بات کا فیصلہ وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کی زیر صدارت محکمہ تعلیم کی کارکردگی کا جائزہ اجلاس میں کیا گیا۔ وزیر اعلیٰ سندھ کو بریفنگ دیتے ہوئے صوبائی سیکریٹری تعلیم فضل پیچوہو نے کہا کہ بائیو میٹرک سسٹم متعارف کرایا ہے جس سے ٹیچنگ اسٹاف کی حاضری کی نہ صرف تصدیق ہو سکے گی بلکہ بہتر طریقہ سے مانیٹرنگ بھی ہو گی انہوں نے بتایا کہ اساتذہ کا90 فیصد سے زائد ڈیٹا سسٹم میں اپ لوڈ کیا جا چکا ہے اور سسٹم نے با قاعدہ کام بھی شروع کر دیا بائیو میٹرک سسٹم کے ذریعے تقرری و تبادلوں اور ترقیوں کی بھی تصدیق کی جا رہی ہے۔ ساتھ بوگس تعیناتیوں کی نشاندہی کرنے میں بھی مدد ملے گی۔

Tags: