شہر میں غیر قانونی بچت بازاروں کیخلاف کارروائی نہ ہو سکی

October 30, 2015 2:38 pm0 commentsViews: 44

محکمہ ای اینڈ آئی پی کے افسران سر پرستی کرنے لگے، کمشنر کراچی کے احکامات ردی کی نذر
کراچی (سٹی رپورٹر)محکمہ ای اینڈ آئی پی کے افسران صوبے کے اعلیٰ ترین افسران کے احکامات پر عملدرآمد کی راہ میں روکاوٹ بن گئے کمشنر کراچی کے احکامات ردی کی نذر، شہر میں لگنے والے غیر قانونی اور خلاف ضابطہ بچت بازاروں کیخلاف کارروائی نہ ہوسکی۔ تفصیلات کے مطابق کراچی میں لگنے والے سینکڑوں نام نہاد بچت بازاروں کیخلاف کمشنر کراچی شعیب احمد صدیقی کی جانب سے دی گئی ہدایت کے باوجود کسی قسم کی کارروائی عمل میں نہیں لائی جاسکی ہے، جس کے باعث شہر قائد میں بڑی تعداد میں غیر قانونی بچت بازار تاحال قائم ہیں، ذرائع کا کہنا ہے کہ شہر میں غیر قانونی بچت بازاروں کی محکمہ بیورو آف سپلائی، محکمہ ای اینڈ آئی پی، ڈی ایم سیز اور شہری انتظامیہ کے افسران سرپرستی کررہے ہیں، ذرائع کے مطابق نام نہاد بچت بازاروں میں قوانین کی دھجیاں اڑائی جارہی ہیں جہاں اسٹال ہولڈرز سے بھاری کرایہ وصول اور اسٹال فروخت کرنے کا عمل جاری ہے، جبکہ بیورو آف سپلائی کے حکام نہ ہی اسٹال ہولڈرز کی شکایات سننے کے لئے تیار ہیں اور نہ ہی بازاروں میں فروخت کی جانے والی اشیاء کی قیمتوں اور معیار کو چیک کررہے ہیں جس کے باعث سستی اشیاء ملنے کی آس لے کر ان بچت بازاروں میں خریداری کیلئے آنے والے شہری لٹنے پر مجبور ہیں۔

Tags: