بلدیہ عظمیٰ محکمہ میڈیکل ہیلتھ سروسز میں ایک ارب کی کرپشن کی تحقیقات سرد خانے کی نذر

October 30, 2015 2:50 pm0 commentsViews: 31

سندھ حکومت من پسند کرپٹ افسران کو بچانے کیلئے او پی ایس کی آڑ میں ایماندار اور قابل افسران کو عہدوں سے ہٹانے لگی
بد عنوانیوں کی9 بڑی انکوائری شروع کرانے والی سینئر ڈائریکٹر کا تبادلہ کرپشن بے نقاب ہونے کی امیدیں دم توڑ گئیں
کراچی (سٹی رپورٹر) حکومت سندھ نے من پسند بااثر کرپٹ افسران کو بچانے کے لئے او پی ایس کی آڑ میں ایماندار اور قابل افسران کو عہدوں سے ہٹانا شروع کر دیا،بلدیہ کراچی محکمہ میڈیکل ہیلتھ سروسز میں ایک ارب روپے سے زائد کرپشن کی تحقیقات سرد خانے کی نذر ہونے کا خدشہ‘ تفصیلات کے مطابق سندھ حکومت نے بلدیہ عظمیٰ کراچی کی سینئر ڈائریکٹر میڈیکل اینڈ ہیلتھ سروسز سلمیٰ کوثر کو او پی ایس افسر قرار دیتے ہوئے تبادلے کے احکامات جاری کردیئے ہیں ذرائع کا کہنا ہے کہ سینئر ڈائریکٹر سلمیٰ کوثر نے محکمے میں ایک ارب روپے سے زائد کرپشن اور بد عنوانیوں کی 9 انکوائریاں شروع کرادی تھیں جس کے باعث کرپٹ مافیا ان کے تبادلے کیلئے متحرک تھی، ذرائع کا کہنا ہے کہ عباسی شہید اسپتال، کراچی میڈیکل اینڈ ڈینٹل کالج، کراچی امراض قلب سمیت دیگر شعبوں میں کرپشن کی 9 تحقیقات شروع کردی گئی تھیں جس میں کروڑوں روپے کی مبینہ کرپشن کی تحقیقات شامل ہیں، ذرائع کا کہنا ہے کہ سینئر ڈائریکٹر کے تبادلے کے بعد کرپشن اور بد عنوانیوں کی تحقیقات سرد خانے کی نذر ہونے کا خدشہ ہے، ذرائع کا کہنا ہے کہ سندھ حکومت کے احکامات پر گزشتہ روز بلدیہ عظمیٰ کراچی محکمہ ایچ آر ایم نے بھی ڈاکٹر سلمیٰ کوثر کے تبادلے کا لیٹر جاری کردیا ہے، بلدیہ کراچی کے ذرائع کا کہنا ہے کہ محکمہ میڈیکل اینڈ ہیلتھ سروسز میں کی جانے والی کرپشن اور بد عنوانیاں بے نقاب ہونے کی امیدیں دم توڑ گئی ہیںذرائع کے مطابق سلمیٰ کوثر کو عہدے سے ہٹانے کے لئے بلدیہ عظمیٰ کراچی کے کرپٹ افسران کے ایک گروپ نے اہم کردار ادا کیا ہے ۔

Tags: