بلوچ لبریشن آرمی کے کارندے اور متحدہ کے سیکٹر انچارج سمیت4ملزمان گرفتار ۔ دیگر جرائم و الزامات میں مزید گرفتاریاں

October 30, 2015 2:53 pm0 commentsViews: 62

نیو کراچی سے مذہبی جماعت کا کارکن گرفتار، قتل اور اغواء برائے تاوان کی وارداتوں کا اعتراف کرلیا، بھتہ خوری میں بھی ملوث ہے
ڈالمیا کے علاقے سے بلوچ لبریشن آرمی اور لیاری گینگ وار کالو کرنٹ گروپ کا ایک کارندہ گرفتار، نیو کراچی سے ایم کیو ایم سیکٹر انچارج پکڑا گیا
کراچی(کرائم رپورٹر)رینجرز اور پولیس نے شہر کے مختلف علاقوں میں چھاپے ،مقابلے اور ٹارگٹڈآپریشن کے دوران بلوچ لیبریشن آرمی اور سیاسی تنظیم کے عہدیدار سمیت4ملزمان کو گرفتار کرکے اسلحہ برآمد کرلیا ۔تفصیلات کے مطابق رینجرز انٹیلی جنس نے نارتھ کر اچی کے ایک مقام پر چھاپہ مارکر متحدہ قومی موومنٹ نیوکراچی سیکٹر انچارج شہباز معظم کو حراست میں لیکر نامعلوم مقام پر منتقل کرکے تفتیش شروع کردی۔ سی ٹی ڈی کے ایس ایس پی جنید شیخ نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے بتایا کہ پولیس نے نیو کراچی میں کارروائی کرتے ہوئے مذہبی جماعت سے تعلق رکھنے والے شاہد قادری کو گرفتار کرکے اس کے قبضے سے اسلحہ برآمد کرلیا گیا ہے ، ملزم نے دوران تفتیش بتایا کہ اس نے 2011میں حامد غوری ، فیصل گنڈیری اور کامران کے ساتھ مل کر سندھی ہوٹل کے قریب فائرنگ کرکے دو پٹھانوں کو قتل کیا، 2011میں فیصل کے ساتھ مل کر نیو کراچی سیکٹر 11Eبلاک 8میں اسٹیٹ ایجنسی کے مالک صلاح الدین عرف پارے کو قتل کیا ۔زین نامی بچے کو اغواء کرکے تاوان وصول کیا تھا ،مذکورہ واردات میں احمد حسین ،شفیق ، ندیم عرف بچہ اور ندیم کی بیوی شامل تھی ۔ملزم نے دوران تفتیش بتایا کہ اس نے عبدل بنگالی اور رحیم بنگالی کے ساتھ مل کر اپنی پارٹی کے کارکن معراج کو قتل کیا تھا ،اسی طرح فیصل ، ندیم عرف بچہ ،ندیم کی بیوی اور حامد غوری کے ساتھ مل کر کامران کو قتل کیا تھا ۔ملزم کے مطابق اس نے گودھرا کے علاقے میں 2013میں ایک فیکٹری سے احمد حسن اور رحیم بنگالی کے ساتھ مل کر بھتہ مانگا تھا جس کی سی سی ٹی وی فوٹیج ٹی وی چینلز پر بھی آئی تھی ۔ملزم کے مطابق ڈیڑھ سال قبل 4Kچورنگی پر حامد غوری اور فیصل گنڈیری کے ساتھ مل کر دو پولیس اہلکاروں کو قتل کیا تھا ۔پولیس کے مطابق ملزم سے مزید تفتیش جاری ہے اور ملزم کے دیگر ساتھیوں کی گرفتاری کے لیے چھاپے مارے جارہے ہیں ۔سی ٹی ڈی نے ڈالمیا کے علاقے میں ایک اور کارروائی کرتے ہوئے بلوچ لیبریشن آرمی اورلیاری گینگ وار کالو کرنٹ گروپ کے کارندے عادل بلوچ کو گرفتار کرکے اس کے قبضے سے اسلحہ برآمد کرلیا ہے ۔پولیس کے مطابق ملزم نے 2007میں اپنے ساتھی عادل عرف گورکن کے ساتھ مل کر پولیس اہلکار ہیڈ کانسٹیبل غلام رسول کو قتل کیا تھا ،2008میں ملزم نے اپنے ساتھ عامر دھوبی کے ساتھ مل کر پولیس موبائل پر حملہ کیا تھا ، جوابی فائرنگ میں ملزم زخمی حالت میں فرار ہوگیا تھا ۔2012میں ملزم نے اپنے دیگر ساتھیوں ستار ، نصیرو کے ساتھ مل کر پولیس موبائل پر حملہ کیا تھا جس میں ایک پولیس اہلکار شہید جبکہ دیگر زخمی ہوئے تھے ۔ناظم آباد پولیس نے عباسی شہید اسپتال میں چھاپہ مارکر زخمی ملزم محمدخان عرف احمد خان کو گرفتار کرلیا ،پولیس کے مطابق ملزم محمد خان سچل پولیس کو مطلوب تھا ،پولیس نے محمد خان کو سچل پولیس کے حوالے کردیا ۔

ایران جانے والے39 افغانی
سمیت95 افراد گرفتار
کراچی(کرائم رپورٹر)پاکستان کوسٹ گارڈ نے صوبہ بلوچستان کے علاقے گوادرروڈ اور جیوانی جیٹی کے قریب چیکنگ کے دوران39افغان باشندوں سمیت 95 افراد کو گرفتار کر لیا ،ملزمان غیر قانونی طور سمندری راستوں سے ایران جانے کی کوشش کر رہے تھے جبکہ افغان باشندے غیر قانونی طور پرسرحد عبور کرکے پاکستان میں داخل ہوئے تھے اور ایران جانے کی کوشش کر رہے تھے ۔ ملزمان سے مزید تفتیش کی جارہی ہے۔

4 کلو حشیش برآمد
3 منشیات فروش گرفتار
کراچی(کرائم رپورٹر)اے این ایف ترجمان کے مطابق اینٹی نارکوٹکس فورس سندھ نے شہر قائدکے مختلف علاقوں میں خفیہ اطلاع پر چھاپہ مار کارروائی کرکے تین منشیات فروشوں کو گرفتار کر لیا ،ملزمان کے قبضے سے 4کلو 400گرام حشیش برآمد کر لی ہے ،اے این ایف نے ملزمان کے خلاف مقدمات درج کرکے انکے دیگر ساتھیوں کی تلاش شروع کر دی ہے۔

چھاپوں اور مقابلے
کے بعد 67 ملزمان گرفتار
کراچی(کرائم رپورٹر)کراچی پولیس نے شہر کے مختلف مقامات پرچھاپے اور مقابلے کے بعد 67 ملزمان کوگرفتار کر کے انکے قبضے سے اسلحہ اوردیگر سامان برآمد کرلیا۔کراچی پولیس کے ترجمان کی جانب سے جاری اعلامیے کے مطابق پولیس نے 24گھنٹوں کے دوران شہر میں 76چھاپے اور 12مقابلوں کے بعد 67ملزمان کو گرفتار کر لیا جن میں قتل ، بھتہ خوری، منشیات ایکٹ، اسلحہ ایکٹ، چوری و ڈکیتی ، منشیات ایکٹ اور دیگر وارداتوں میں ملوث ملزمان شامل ہیں ملزموں کے قبضے سے 15 پستول،34گرام ہیروئن،بھاری مقدار میں چرس اور دیگر سامان برآمدکرلیا۔

خاتون کا قتل ‘شوہر اور
اس کے دو بھائی گرفتار
کراچی(کرائم رپورٹر)سرجانی ٹائون پولیس نے اہلیہ کے قتل میں شوہر اسکے دو بھائیوں کو گرفتار کرکے مقدمہ درج کرلیا ۔تفصیلات کے مطابق سرجانی ٹائون سیکٹر فوربی میں قائم گھر کے زیر زمین پانی کے ٹینک سے گذشتہ روز عارفہ زوجہ اقبال کی لاش ملی تھی ،ایس ایچ او امتیاز میر نے بتایاکہ شوہر اقبال نے پولیس کو بیان دیا تھا کہ میری اہلیہ اتفاقی طورپر پانی کے ٹینک میں گر کر ہلاک ہوگئی تھی ،پولیس نے بتایاکہ مقتولہ عارفہ کہ اہلخانہ نے الزام عائد کیا کہ عارفہ کو اسکے شوہر اور دو دیوروں نے قتل کیا ہے ،پولیس نے مقدمہ درج کر کے اقبال اسکے دوبھائیوں گرفتار کرکے تفتیش شروع کر دی۔

گھروں میں چوری کی وارداتوں
میں ملوث3 خواتین گرفتار
گھروں میں چوری کرنے والی تین خواتین گرفتار
گرفتاری ٹیپو سلطان پولیس کے ہاتھوں عمل میں آئی ملازمت کے صرف تین دن بعد بنگلے کا صفایا کر دیا تھا
کراچی(کرائم رپورٹر) ٹیپوسلطان پولیس نے گھر میں چوری کی واردات میں ملوث تین خواتین کو گرفتارکرلیا۔تفصیلات کے مطابق ٹیپو سلطان پولیس نے بنگلہ نمبر89میں چوری کی وارادت میں ملوث تین خواتین کو گرفتار کرلیا ہے ،ایس ایچ او راؤ ناظم کے مطابق مدعی نے پولیس کو بیان دیا ہے کہ پٹھانی نامی خاتون سمیت تین خواتین گھروں میں صفائی وستھرائی کا کام کرتی تھیں اور تین دن قبل بنگلے کی مالکن نے گھر میں کام کے لئے رکھا تھا اور تیسرے روز ہی کمرے میں الماری کی دراز سے طلائی چوڑی اور پانچ ہزار روپے نکال لئے ۔واقعے کی اطلاع ملتے ہی پویس نے تینوں خواتین کو گرفتار کرکے تفتیش شروع کردی ہے ۔

کروڑوں کا کالا دھن بیرون ملک منتقل کرنے والا گرفتار
مارس منی چینجر کے ذریعے کیمیکل درآمد کنندہ کی ملی بھگت سے سیاستدانوں اور بیورو کرٹیس کا پیسہ بیرون ملک منتقل کیا گیا
ایف آئی اے کی صرف منی چینجر کیخلاف بھرپور کارروائی، ملکی خزانے کو بھرپور نقصان پہنچانے والوں تک پہنچنے سے گریز
کراچی( کرائم ڈیسک) ایف آئی اے اسٹیٹ بینک سرکل نے مارس منی ایکسچینج کمپنی کے ذریعے کروڑوں روپے حوالہ ہنڈی کرنے والے ایک ملزم کو گرفتار کرلیا۔ ملزم کیمیکل کے در آمد کنندہ کی ملی بھگت سے با اثر سیاستدانوں، بیورو کریٹس اور اعلیٰ افسران کا کالا دھن بیرون ملک منتقل کرتا رہا ہے۔ مارس منی ایکسچینج کمپنی کے خلاف تحقیقات میں ایف آئی اے حکام نے رقوم منتقل کرنے والے افراد کے خلاف تو بھر پور کارروائی کی ہے لیکن کرپشن اور ٹیکس چوری کے ذریعے قومی خزانے کو بھر پور نقصان پہنچانے والی شخصیات کے خلاف کارروائی سے گریز کیا جا رہا ہے۔ ہنڈی کیس میں فہیم شیخانی کو گرفتار کیا گیا ہے۔ فہیم شیخانی نے مارس منی ایکسچینج کمپنی کے ذریعے رقوم بھارت اور چین منتقل کی ہیں۔ مارس منی ایکسچینج کے مالکان دو سال قبل ملک سے فرار ہوگئے تھے۔ ایف آئی اے کو پتا چلا کہ جاوید نور اللہ، نوشاد نور اللہ اور ان کے والد نور اللہ با اثر شخصیات کے اربوں روپے لے کر فرار ہوئے ہیں۔ تاہم کسی بھی متاثرہ شخص کی طرف سے قانونی کارروائی نہیں کی گئی بلکہ ایسا لگتا تھا کہ یہ واقعہ ہوا ہی نہیں۔ تحقیقات سے معلوم ہوا کہ منی ایکسچینج کے متاثرین میں سیاستدان، بیورو کریٹس، اعلیٰ پولیس افسران اور شہر کے معروف صنعتکار و تاجر بھی شامل ہیں۔ ان سب نے مبینہ طور پر کالا دھن بیرون ملک منتقل کرنے کیلئے ملزمان کو دیا تھا۔

 

Tags: