عمران پر بیٹوں کا دبائو، ریحام کی طلاق کا سبب بنا

October 31, 2015 5:36 pm0 commentsViews: 92

بیٹوں نے واضح کہہ دیا تھا کہ ریحام کو چھوڑ یں گے تو پھر وہ بنی گالہ آئیں گے، عمران خان بیٹوں کو منانے میں ناکام ہو گئے تھے
بیٹوں کا اپنی والدہ جمائما سے دوبارہ نکاح پر اصرار، مرضی کیخلاف شادی کی دھمکی بھی دیدی تھی، ذرائع
لاہور( نیوز ڈیسک) ریحام خان کو چھوڑنے کیلئے عمران خان کے بیٹوں کا بہت دبائو تھا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ آخری بار جب عمران خان کے دونوں بیٹے پاکستان آئے تھے تو وہ اپنا قیام مختصر کرکے فوری چلے گئے تھے اور والد عمران خان کو واضح طور پر کہہ دیا تھا کہ وہ بنی گالہ میں اس وقت آئیں گے جب آپ ریحام کو چھوڑ دیں گے۔ عمران خان بیٹوں کو منانے کیلئے لندن بھی گئے تھے۔ مگر ناکام رہے اور دونوں بیٹوں نے یہاں تک کہہ دیا تھا کہ وہ پاکستان اگر آئیں گے تو اپنی پھوپھی کے پاس جائیں گے ان کا کہنا تھا کہ ہمیں نہ آپ کی جائیداد کا کوئی لالچ ہے، نہ ہم یہ کہتے ہیں کہ آپ دوبارہ جمائما سے نکاح کر لیں۔ ہم تو صرف یہ کہتے ہیں کہ اس کو چھوڑ دیں۔ عمران خان کے بڑے بیٹے نے تو یہاں تک کہہ دیا تھا کہ اگر ہماری بات نہ مانی تو وہ بھی اپنی شادی ان کی مرضی کے خلاف اور کسی ایسی جگہ کریں گے جس پر بے شک ان کو اعتراض ہو۔ ذرائع کے مطابق بیٹوں کے اس دبائو کے بعد عمران خان نے اسی وقت فیصلہ کر لیا تھا۔ اس کے بعد اپنی بہنوں کو بھی راضی کیا اور ان سے یہ کہا کہ دسمبر میں وہ باقاعدہ اعلان کر دیں گے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ریحام اور عمران خان کے درمیان معاملات طے کرانے میں لندن سے تعلق رکھنے والے دو افراد نے کردار ادا کیا اور ثالث بھی وہی بنے۔ ذرائع کے مطابق طلاق کا اعلان الیکشن سے ایک دن پہلے کرنے کا فیصلہ اس لئے کیا گیا کہ اطلاع ملی تھی کہ ریحام لندن میں کسی تقریب میں یہ بات کر سکتی ہیں جس پر معاملہ کسی اور طرف جا سکتا ہے۔ ذرائع کے مطابق عمران خان کو کچھ اہم ذمہ داروں نے بھی یہ پیغام پہنچایا تھا کہ ریحام خان کسی غیر ملکی ایجنسی کے ساتھ بھی رابطے میں ہیں اور ان پر ان دونوں میں کافی معاملات بگڑے تھے۔

ریحام سے جھگڑے کے بعد عمران کو خطرہ پیدا ہو گیا تھا،
عمران کو شبہ تھا کہ انہیں کھانے میں زہر دے کر ہلاک کیا جا سکتا ہے، ذرائع کا انکشاف
اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) عمران خان اور ریحام خان میں اختلافات شدید ہوگئے تھے کہ چند دن قبل جھگڑے کے دوران ریحام نے عمران پر ہاتھ بھی اٹھایا تھا، جبکہ اس صورتحال سے عمران خان کو خطرہ پیدا ہوگیا تھا کہ ان کے کھانے میں زہر ملا کر انہیں ہلاک کیا جا سکتا ہے۔ ذرائع کے مطابق عمران خان اور ریحام خان کے درمیان تقریباً2 ماہ سے کشمکش چل رہی تھی۔ عمران خان اپنی اہلیہ کے سیاسی کردار کے مخالف تھے۔ جبکہ دوسری جانب ریحام نے عمران خان سے شادی سیاسی گلیمر کی وجہ سے ہی کی تھی اور ان کا دعویٰ تھا کہ وہ بیوی ہونے کے ناطے عمران خان کی شخصیت کو نکھار نے میں اپنا کردار ادا کریں گی۔

30 اکتوبر عمران خان کیلئے اہم
لاہور( مانیٹرنگ ڈیسک) 30 اکتوبر کو تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کے سیاسی کیریئر کا کامیاب ترین دن‘ جبکہ ازدواجی زندگی کے حوالے سے ایک ناکام دن ثابت ہوا ہے۔

عمران خان کی سیاست پر طلاق کے کیا
اثرات ہوں گے‘بڑا سوال ہے‘ بی بی سی
اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) عمران خان اور جمائما خان کی طلاق پر تبصرے میں برطانوی نشریاتی ادارے نے تحریک انصاف کے سربراہ کی سیاست پر پڑنے والے اثرات کو ایک بڑا سوال قرار دیا ہے‘ اپنی رپورٹ میں بی بی سی نے کہا کہ دونوں کے درمیان طلاق ایک ایسے وقت میں ہوئی جب عمران خان بلدیاتی انتخابات اور خیبر پختونخوا کے زلزلے کیلئے مختلف علاقوں کا دورہ کررہے ہیں جبکہ مقامی میڈیا پر ایک بڑا سوال یہ اٹھایا جارہا ہے کہ اس علیحدگی سے عمران خان کی سیاست پر کیا اثرات پڑیں گے۔

دو کالم
عمران خان کی ذاتی زندگی پر کیچڑ نہ اچھالا جائے، نواز شریف، زرداری، الطاف حسین
طلاق عمران خان کا ذاتی معاملہ ہے، پارٹی رہنما اور ورکرز بیانات اور تبصرہ سے گریز کریں
مسلم لیگ (ن) پیپلزپارٹی اور ایم کیو ایم کے رہنمائوں کو خاموش رہنے کے احکامات جاری
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) وزیر اعظم نواز شریف نے مسلم لیگ (ن) کے رہنما اور عہدیداران کو ہدایت کی ہے کہ وہ عمران خان کے خاندانی امور کے بارے میں تبصرہ کرنے سے گریز کریں۔ جمعہ کو وزیر اعظم ہائوس کی طرف سے بیان میں کہا گیا ہے کہ وزیر اعظم نے عمران خان اور ریحام خان کے درمیان طلاق کی اطلاعات سامنے آنے کے بعد خاص طور پر یہ ہدایات جاری کی ہیں، پیپلز پارٹی کے شریک چیئر مین اور سابق صدر آصف علی زرداری کا کہنا ہے کہ عمران خان اور ریحام خان کی طلاق ان کا ذاتی معاملہ ہے اور وہ اس پر تبصرہ نہیں کریں گے، دوسری جانب بلال زرداری نے بھی پیپلز پارٹی کے رہنما کو طلاق کے معاملے پر تبصرہ کرنے سے روک دیا ہے۔ پیپلزپارٹی کے چیئر مین بلاول بھٹو زرداری نے یہ ہدایت ایک سیاست دان کی شادی اور طلاق سے متعلق ذاتی معاملے پر بعض تبصروں کا نوٹس لیتے ہوئے جاری کی۔ متحدہ قومی موومنٹ کی رابطہ کمیٹی کے کنوینر ندیم نصرت نے ایک بیان میں کہا کہ قائد تحریک الطاف حسین نے ایم کیو ایم کے تمام رہنمائوں اور تنظیمی عہدیداروں کو ہدایت کی ہے کہ تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان اورریحام خان کی طلاق ان کا نجی معاملہ ہے۔ لہٰذا کسی بھی قسم کی بیان بازی سے گریز کیا جائے۔ ندیم نصرت نے کہا کہ ہمیں سیاست میں گالم گلوچ، کسی کی ذات پر کیچڑ اچھالنے اور نجی زندگی کو اچھالنے کے عمل سے گریز کرنا چاہئے اور تہذیب و نظریات کی سیاست کرنی چاہئے۔

پی ٹی آئی کے کارکن جذباتی‘ شیخو پورہ
کے2 افراد کی خودسوزی کی کوشش
شیخوپورہ( یو پی پی) عمران خان اور ریحام خان کی راہیں جدا ہونے کی خبر نشر ہونے پر تحریک انصاف کے کارکن جذباتی ہوگئے‘ محلہ پرانا شہر کے رہائشی مرزا عظمت بیگ اور تصویر محل روڈ کے رہائشی محمد افضل خان نے خودسوزی کرنے کی کوشش کی تاہم اہل علاقہ نے ناکام بنادی۔

عمران خان کی شادی برے
وقت میں ہوئی‘ ماہر علم نجوم
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) ماہر علم نجوم سامعہ خان کا کہنا ہے کہ تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان کی شادی برے وقت میں ہوئی اور برے وقت میں ہی اپنے انجام کو پہنچی ہے‘ نجی ٹی وی کے مطابق ماہر علم نجوم سامعہ خان کا پاکستان تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان اور ریحام خان کے درمیان ہونیوالی طلاق کے حوالے سے کہنا ہے کہ جب عمران خان نے شادی کی تو اس وقت ہی کہہ دیا تھا کہ کہ یہ وہ گولی ہے جو ان کے زوال کا سبب بنے گی‘ انہوں نے اپنے محدود علم کا سہارا لیتے ہوئے کہا کہ یہ عمران خان کی بد قسمتی کہہ لیجئے کہ ان کو شادی راس ہی نہیں‘ تاہم اگر اگست2016 ء میں عمران خان اگلی شادی کا فیصلہ کریں تو بہت بہتر ہوگا۔

عمران خان پھر کرلیں‘ نکاح
خواں مفتی سعید کا مشورہ
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) عمران خان اور ریحام خان کا نکاح پڑھانیوالے مفتی محمد سعید نے عمران خان کو ایک بار پھر شادی کا مشورہ دے دیا ہے اور کہا ہے کہ حق مہر ایک لاکھ روپے مقرر تھا جو اس وقت دے دیا گیا تھا‘ تاہم وہ نکاح کی طرح طلاق کی تفصیلات بتانے سے بھی گریزاں ہیں‘ مفتی سعید کہتے ہیں کہ عمران خان کو شادی کا مشورہ ضرور دیا ہے لیکن کسی خاتون کا نام نہیں دیا۔

چلو اک بار پھر سے اجنبی بن جائیں ہم دونوں
عمران خان سے راستے جدا!!!ابھی طلاق کا عمل مکمل نہیں ہوا، ریحام خان
کچھ قریبی لوگوں نے میرے اور عمران کے درمیان دراڑیں ڈلوائیں اور نفرت کے بیج بوئے، مالی معاملات کی کوئی بات نہیں ہوئی
میرے، ریحام اور ہمارے خاندان کے لیے افسوس کی گھڑی ہے، میڈیا اور عوام ہماری ذاتی زندگی اور عزت کا خیال کریں، عمران خان
اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک/ نیوز ایجنسیاں) عمران خان اور ریحام خان کے راستے جدا دونوں دس ماہ بعد ایک دوسرے سے علیحدہ ہوگئے۔ شادی کا تلخ انجام عمران خان نے باہمی اتفاق سے اپنی اہلیہ ریحام خان کو طلاق دے دی، دونوں نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر طلاق کی خبر کی تصدیق کر دی اور اس طرح8 جنوری 2015ء کو عمران خان اور ریحام خان نے اپنی زندگی کا جو سفر شروع کیا تھا وہ 9 ماہ 22 دن بعد 30 اکتوبر 2015ء کو ختم ہوگیا۔ تحریک انصاف کے ترجمان نعیم الحق نے بھی طلاق کی تصدیق کرتے ہوئے کہا ہے کہ عمران خان اور ریحام خان نے باہمی رضا مندی سے علیحدگی کا فیصلہ کیا ہے اب دونوں میاں بیوی نہیں رہے علیحدگی ہو چکی ہے۔ دریں اثناء نجی ٹی وی سے بات کرتے ہوئے ریحام خان نے کہاکہ عمران خان اور میں نے گزشتہ روز طلاق کی بات کی۔ اس سے قبل طلاق کی کبھی بات نہیں ہوئی۔ ابھی طلاق کا عمل مکمل نہیں ہوا ارادہ کیا ہے، طلاق کے کاغذات تیار کئے جا رہے ہیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ مالی معاملات کی کوئی بات نہیں ہوئی یہ سب جھوٹ ہے۔ کچھ قریبی لوگوں نے عمران خان اور ان کے درمیان دراڑیں ڈلوائیں، نفرت کے بیچ بوئے اور معاملہ اس نوبت تک پہنچایا۔ ادھر عمران خان نے ریحام خان کو طلاق کے عوض پیسے دینے کی خبروں کو بے بنیاد قرار دیتے ہوئے سختی سے تردید کی ہے اور کہا ہے کہ یہ میرے ، ریحام خان اور ہمارے خاندان کیلئے افسوس کی گھڑی ہے۔ میڈیا اور عوام سے درخواست ہے کہ ہماری ذاتی زندگی اور عزت کا خیال کریں اور بے بنیاد قیاس آرائیوں سے گریز کریں۔ جمعہ کے روز سماجی رابطے کی ویب سائٹ ٹوئٹر پر عمران خان نے کہاکہ میں ریحام خان کی دل سے عزت کرتا ہوں اور وہ ایک با کردار خاتون ہیں، علیحدگی کے عوض ان کو رقم یافلیٹ دینے کی خبریں بے بنیاد اور شرمناک ہیں ان میں کوئی صداقت نہیں علیحدگی کا فیصلہ باہمی اتفاق سے کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق ریحام خان لندن چلی گئی ہیں اور عمران خان نے ان کے جانے کے بعد ان کو ای میل کے ذریعے طلاق بھجوا دی اور اسلامی طریقے سے تین طلاقیں دی ہیں۔ واضح رہے کہ عمران خان نے ریحام خان سے رواں برس آٹھ جنوری کو شادی کی تھی۔ ریحام خان اور عمران خان کی منگنی کی رسم بنی گالہ اسلام آباد میں ہوئی تھی اور دونوں کا نکاح مفتی سعید نے پڑھایا اور ایک لاکھ روپے حق مہر طے کیا گیا تھا، کچھ مہینوں سے طلاق کی خبریں گردش کر رہی تھیں لیکن عمران خان یا ریحام خان کی جانب سے اس کا اعتراف نہیں کیا گیا تھا۔

 

Tags: