آج صبح پنجاب اور سندھ میں بلدیاتی الیکشن کے دوران ہنگامہ آرائی

October 31, 2015 5:41 pm0 commentsViews: 27

دونوں صوبوں میں سخت سیکورٹی میںپولنگ جاری، پولیس اور رینجرز کے علاوہ نجی اہلکار بھی ڈیوٹیاں انجام دے رہے ہیں، فوج بھی اسٹینڈ بائی ہے
جیکب آباد میں عیسانی پولنگ اسٹیشن پر رینجرز نے جعلی ووٹ ڈالنے کو گرفتار کرلیا، پولنگ اسٹیشن پر دو گروپوں میںتصادم، 3افراد زخمی ہوگئے، خیرپور میں پولنگ اسٹیشن پر تعینات ایس ایچ او دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کر گیا،گھوٹکی میں امیدوار کا غلط نشان چھپنے پر انتخابات ملتوی
لاہور میں پولنگ وقت پر شروع نہ ہونے پر تحریک انصاف کے کارکنوں کا احتجاج، بورے والا میں دو گروپوں میں تصادم، فائرنگ سے چار افراد زخمی، ایک کی حالت نازک، پنجاب کے 618اور سندھ کے 183پولنگ اسٹیشنوں پر سیاسی کارکنوں میں ہاتھا پائی اور اسلحہ استعمال کیے جانے کا خدشہ
کراچی( مانیٹرنگ ڈیسک/بیورو رپورٹ) آج صبح سندھ اور پنجاب کے20 اضلاع میں بلدیاتی الیکشن کیلئے ہونیوالی پولنگ کے دوران ہنگامہ آرائی‘ کئی واقعات پیش آئے‘ ضابطہ اخلاق کی کھلے عام دھجیاں اڑائی جارہی ہیں‘ دونوں صوبوں میں پولنگ سخت سیکورٹی انتظامات میں جاری ہے‘ پولیس اور رینجرز کے علاوہ سندھ میں نجی افراد کو بھی سیکورٹی پر مامور کیا گیا ہے جبکہ فوج بھی اسٹینڈ بائی میں ہے‘ تفصیلات کے مطابق آج صبح ساڑھے سات بجے سندھ کے مختلف اضلاع میں پولنگ شروع ہوئی تو امید واروں کے ساتھ ووٹر وں میں بھی خاصا جوش و خروش دیکھنے میں آیا ‘سندھ میں پیپلز پارٹی کا مسلم لیگ (ن) اور ایم کیو ایم سمیت دیگر جماعتوں کے امید واروں سے انتہائی سخت مقابلہ ہے‘ انتخابی عمل کی مانیٹرنگ کیلئے بلاول بھٹو خود لاڑکانہ پہنچے ہیں وہ یہاں اپنا ووت بھی کاسٹ کریں گے جب پولنگ شروع ہوئی تو کچھ ناخوشگوار واقعات بھی رونما ہوئے جبکہ ہنگامہ آرائی بھی ہوئی جیکب آباد میں عبدالرزاق عیسانی پولنگ اسٹیشن پر جعلی ووٹ ڈالنے والے ایک شخص کو رینجرز نے گرفتار کرلیا جبکہ پولنگ اسٹیشن پر 2 گروپوں میں تصادم میں3 افراد زخمی‘ دوسری جانب گھوٹکی میں بھی پولنگ اسٹیشن پر جے یو آئی کے امیدواروں نے کتاب کی جگہ چابی کا نشان چھپنے پر احتجاجاً بلدیاتی انتخابات کا بائیکاٹ کردیا ہے‘ خیر پور میں پولنگ اسٹیشن پر تعینات تھانہ اے آر لو کے ایس ایچ او دل کا دورہ پڑنے سے انتقال کرگئے‘ خیر پور سمیت دیگر علاقوں میں پولنگ اسٹیشنوں پر انتخابی ساز و سامان نہ پہنچنے سے پولنگ کا عمل کئی گھنٹوں کی تاخیر سے شروع ہوا‘ گھوٹکی میں ہٹڑی یونین کونسل سے فنکشنل لیگ کے امید وار کا نشان غلط چھپنے پرڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر نے الیکشن ملتوی کردیا‘ لاڑکانہ یوسی14 کے پولنگ اسٹیشن پر بجلی غائب ہونے سے پولنگ میں مشکلات کا سامنا کرنا ہے۔کشمور کندھ کوٹ میں وارڈ2 میں خواتین ورکرز میں جھگڑے کے بعد پولنگ روک دی گئی تاہم پولیس نے پہنچ کر صورتحال پر قابو پالیا اور پولنگ دوبارہ شروع کرادی گئی‘ اس بار بلدیاتی انتخابات میں الیکشن کمیشن کی جانب سے شفاف الیکشن اور بہترین انتظامات کے دعوے دھرے کے دھرے رہ گئے‘ بد انتظامی ‘تاخیر کے باعث پولنگ سست روی کا شکار ‘پولنگ اسٹیشنوںپر بھاری سیکورٹی تعیناتی کے باوجود سارا نظام درہم برہم رہا‘ سیاسی پارٹیوں کی جانب سے شدید احتجاج اور لاہور‘ جیکب آباد‘ وہاڑی اور دیگر مقامات پر انتخابی نشانات غلط چھپنے پر امید واروںنے احتجاجاً الیکشن سے بائیکاٹ کا اعلان کردیا۔آج صبح خیر پور میں وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ کی صاحبزادی اور رکن قومی اسمبلی نفیسہ شاہ نے اپنا ووٹ کاسٹ کیا‘ یہ حیرت انگیز بات ہے کہ جہاں پر نفیسہ شاہ ووٹ کاسٹ کرنے گئیں وہاں پر پولنگ اسٹیشن پر سخت بد انتظامی دیکھنے میں آئی اور پولنگ ایک گھنٹے کے بعد شروع ہوئی کیوں کہ بیلٹ بیکس سیل نہیں تھے جس کیلئے سیل کا مواد موجود نہیں جس پرنفیسہ شاہ نے ڈی سی او خیر پور کو ٹیلی فون پر سخت ڈانٹ کر کہا کہ آپ کی موجودگی میں انتخابی سامان پولنگ اسٹیشن نہیں پہنچا‘ اس کی وضاحت بھی طلب کی‘ جس پر ڈی سی او خیر پور نے معافی مانگی واضح رہے کہ پولنگ اسٹیشن پر ایک بھی ووٹ کاسٹ نہیں ہوا۔نجی ٹی وی کے مطابق پولنگ اسٹیشن کے باہر وزیراعلیٰ سندھ کے بھتیجے امجد علی شاہ جو جنرل کونسلر کا امید وار کے بینر اور پوسٹر لگے تھے جو الیکشن کمیشن کے ضابطہ اخلاق کی سنگین خلاف ورزی ہے جبکہ اس موقع پر سخت حفاظتی اقدامات نظر آئے‘ تاہم بے انتظامی کی حد کردی گئی‘ واضح رہے کہ خیر پور میں32 پولنگ اسٹیشن کو حساس ترین و دیگر کو حساس قرار دیا گیا جبکہ پولیس اور رینجرز کے ساتھ پاک فوج کے دستے بھی تعینات کئے گئے تاکہ کوئی نا خوشگوار واقعہ پیش نہ آسکے۔لاہور میں جوہر ٹائون میں ن لیگ او ر پی ٹی آئی کی خواتین ورکرز میں تصادم ہوگیا۔ جس کے بعد پولنگ روک دی گئی۔ خواتین ورکرز کے جھگڑے میں مرد کارکنان بھی میدان میں آگئے۔ دونوں پارٹیوں کے درمیان نعرے بازی بھی کی گئی۔ گجرات یونین کونسل 5پر کونسل کے انتخابات مسلم لیگ ن کے امیدوار کا نشان شیر کے بجائے تالاچھپنے کے باعث انتخاب ملتوی کر دئیے ۔لاہور کے2 پولنگ اسٹیشن پر بیلٹ پیپر پر مسلم لیگ (ن) کے امیدواروں کے نشانات ہیرا اور بالٹی چھپنے پر امیدواروں کا احتجاج اور پولنگ روک دی گئی۔ اتفاق کالونی امر سھدو و دیگر لاہور کے پولنگ اسٹیشنوں پر پولنگ روک دی گئی ڈسٹرکٹ الیکشن کمشنر نے پولنگ ملتوی کر دی۔ آج صبح لاہور میں یوسی231 میں پولنگ شروع نہ ہونے پر پاکستان تحریک انصاف نے احتجاجاً روڈ بلاک کر دیا۔ بیلٹ پیپر پر غلط نشان پرنٹ ہونے پر پولنگ اسٹیشن پر پولنگ روک دی۔ بورے والا توسیع گائوں میں پولنگ کے دوران دو گروپوں میں تصادم ، فائرنگ سے4 افراد زخمی جس میں ایک کی حالت تشویشناک ہے۔ وہاڑی اور گھگھر منڈی میں تصادم کے نتیجے میں بھی4 کارکن زخمی ہوگئے‘ لاہور میں پی ٹی آئی کے کارکنان اور پولیس میں تصادم کے باعث کشیدگی پھیل گئی‘ ڈہرکی کے وارڈ نمبر 3 میں گرپوں میں تصادم ہوا‘ اوکاڑہ میں بھی تصادم کے باعث2 افراد زخمی ہوگئے ۔حساس اداروں نے سندھ اور پنجاب کی انتظامیہ کو ایک خفیہ رپورٹ میں آگاہ کیا ہے کہ پنجاب میں618 اور سندھ کے183 انتہائی اہم پولنگ اسٹیشنز پر سیاسی کارکنوں میں ہاتھا پائی اور اسلحہ استعمال کئے جانے کا خطرہ ہے۔ معتبر ذرائع کے مطابق رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ پنجاب میں623 اور سندھ میں216 سیاسی کارکنان معاملات کو خراب کرنے کی حکمت عملی طے کئے ہوئے ہیں اور یہ اسلحہ بھی استعمال کر سکتے ہیں، ان پولنگ اسٹیشنز پر متعلقہ سیاسی پارٹیوں نے اپنے خصوصی کارکنوں کو تعینات کیا ہے۔

Tags: