خلاف ضابطہ بھرتیاں اسمال انڈسٹری سندھ کے 3افسران سے مراعات واپس لینے کی سفارش

October 31, 2015 5:54 pm0 commentsViews: 23

محکمے میں ڈائریکٹرز کی بھرتی اور ترقی خلاف ضابطہ ہے، ان کی تربیت پر آنے والے اخراجات بھی واپس لیے جائیں
ایک ڈائریکٹر کی ترقی کے خلاف سپریم کورٹ کے فیصلے کے بعد تنزلی کرکے پھر ترقی دے دی گئی، آڈٹ رپورٹ
کراچی( نیوز ڈیسک) محکمہ اسمال انڈسٹری سندھ میں آڈٹ کے دوران خلاف ضابطہ بھرتیوں اور ترقیوں کا انکشاف کیا گیا ہے۔ آڈٹ رپورٹ میں سندھ اسمال انڈسٹری کے محکمہ کے تین افسران سے تنخواہ سمیت مراعات کی تربیت پر ہونیو الے اخراجات واپس لینے کی سفارش کی گئی تفصیلات کے مطابق ڈی جی کمرشل کی آڈٹ رپورٹ سال2014-15 میں سندھ اسمال انڈسٹری کے متعلق رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ محکمہ میں تین ڈائریکٹرز کی بھرتی اور ان کی ترقی خلاف ضابطہ کی گئی ہے۔ آڈٹ رپورٹ میں گریڈ 18 کے ڈپٹی منیجر ڈائریکٹر محمد عابد، گریڈ18 کے جوائنٹ ڈائریکٹر عزیز الدین اور گریڈ19 کے ڈائریکٹر ثروت فہیم کی بھرتی اور انہیں دی گئی تنخواہ سمیت تمام مراعات اور ان کی ٹریننگ پر ہونے والے اخراجات واپس کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ محکمہ آڈٹ کی رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ان کی بھرتی حکومت سندھ کے سروسز رولز1978ء کے مطابق نہیں کی گئی ہے۔ آڈٹ رپورٹ میں ثروت فہیم کی تعلیمی اسناد کو بھی غیر تصدیق شدہ قرار دیا گیا ہے۔ سپریم کورٹ آف پاکستان کی جانب سے آئوٹ آف ٹرن پروموشن کے خلاف فیصلہ آنے کے بعد ثروت فہیم کو پروموٹ کیا گیا لیکن10ماہ کے دوران انہیں دوبارہ ترقی دے کر گریڈ19 میں تعینات کیا گیا جو عدالتی فیصلے کی عدلی ہیں۔

Tags: