بلدیاتی انتخابات سنگین بے ضابطگیوں کا شکار ہوئے،فافن

November 2, 2015 3:29 pm0 commentsViews: 15

فوج کی نگرانی میں الیکشن ضروری ہے، خیرپور میں12 افراد کا قتل سنگین واقعہ ہے
الیکٹرونگ ووٹنگ پر5 ارب ڈالر کے اخراجات آئینگے، چیف ایگزیکٹو فافن شاہد فیاض کی پریس کانفرنس
کراچی( اسٹاف رپورٹر) فری اینڈ فیئر الیکشن نیٹ ورک( فافن) کے چیف ایگزیکٹو آفیسر شاہد فیاض نے کہا ہے کہ بلدیاتی انتخابات بے ضابطگیوں کا شکار ہوگئے‘ سندھ کے8 اضلاع میں ہفتے کو ہونیوالے انتخابات بعض حلقوں میں پولنگ وقت پر شروع نہیں ہوئی اور پولنگ کا عملہ وقت پر نہیں پہنچ سکا جس کی وجہ سے ووٹرز کو مشکلات کا سامناکرنا پڑا‘ تاہم ماضی کے مقابلے میں انتخابات بہتر تھے‘ وہ اتوار کو پریس کلب میں پریس کانفرنس سے خطاب کررہے تھے‘ اس موقع پر یونس بندھانی‘ شاہد ندیم مظہر و دیگر بھی موجود تھے‘ فوج کی نگرانی میں انتخابات ضروری ‘ انہوں نے کہا کہ سندھ میںہونیوالے انتخابات میں ہمارے 356 مبصرین تعینات تھے‘ جن میں306 مرد اور 50 خواتین شامل تھیں اور ہر اوبزرور نے4پولنگ اسٹیشنز کا دورہ کیا‘ جنہوںنے ابتدائی رپورٹ پیش کی ہے‘ حتمی رپورٹ بعد میں جاری کی جائیگی‘ انہوں نے ایک سوال پر کہا کہ ہم الیکٹرانک ووٹنگ کے حق میں نہیں ہیں‘ کیوں کہ اس سے انتخابات کے اخراجات 5 ارب ڈالر تک پہنچ جائیں گے‘ انہوں نے کہا کہ موجودہ بلدیاتی انتخابات میں بے ضابطگیاں ہوئی ہیں‘ تاہم ماضی کی طرح ایسی اطلاع موصول نہیں ہوئی کہ جب پولنگ اسٹیشنز پر قبضے ہوتے تھے‘ انہوں نے کہا کہ ایسی اطلاعات ہوئیں کہ لاڑکانہ‘ سکھر‘ گھوٹکی اور جیکب آباد میں پولنگ کا عمل روکا گیا اور گنتی بھی دیر سے شروع کی گئی‘ انہوں نے کہا کہ انتخابات کے دوران امید وار اور ان کے حمایتوں کو کنونسنگ کرتے ہوئے دیکھا گیا‘ انہوں نے کہا کہ انتخابات کے دوران خیرپور کے علاقے میں جو فائرنگ سے12 افراد جاں بحق ہوئے وہ افسوسناک واقعہ ہے‘ ایسے واقعات کی ماضی میں روک تھام ہونی چاہئے اور الیکشن کمیشن و صوبائی حکومت کو ایسے اقدامات کرنے چاہئے ماضی میں ان واقعات کو روکا جاسکے۔

Tags: