بچوں سے زیادتی کرنیوالوں کو عمر قید یا سزائے موت دینے کا بل منظور

November 4, 2015 4:41 pm0 commentsViews: 21

زیادتی کیس پر کارروائی نہ کرنیوالے پولیس افسر کو 6 ماہ سے 2 سال اور متاثرہ بچے کی شناخت ظاہر کرنے والے کو 2 سال تک سزا ملے گی
بچی اور غیر مسلم خاتون سے جبری شادی پر 5 سے 10 سال قید کی سزا مقرر کرنے کی تجویز قائمہ کمیٹی قومی اسمبلی کے اجلاس میں فیصلے
اسلام ( آئی این پی) قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے داخلہ نے فوجداری قانون میں ترمیم کا بل منظور کرلیا ہے بل میں نو عمر بچوں سے بد اخلاقی کرنے والوں کیلئے عمر قید یا موت کی سزا تجویز کی گئی ہے جبکہ اس حوالے سے کارروائی نہ کرنے والے پولیس افسر کو 6 ماہ سے2 سال اور متاثرہ بچے کی شناخت ظاہر کرنے والے کو2 سال تک سزا ملے گی نو عمر بچی یا غیر مسلم عورت سے جبری شادی پر5 سے10 سال قید مقرر کرنے کی بھی تجویز دی گئی۔ بل منظوری کیلئے جمعے سے شروع ہونے والے قومی اسمبلی کے اجلاس میں پیش کیا جائے گا۔ منگل کو کمیٹی کا اجلاس چیئر مین رانا شمیم کی زیر صدارت پارلیمنٹ ہائوس میں ہوا اجلاس میں کمیٹی اراکین اور وزارت قانون و انصاف اور وزارت  داخلہ کے اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔ کو اجلاس میں مسلم لیگ ن کی رکن قومی اسمبلی شائستہ پرویز ملک کی جانب سے فوجداری قانون میں ترمیم کے  بل پر بحث کی گئی۔ اس موقع پر جے یو آئی کی نعیمہ کشور نے کہا کہ بچوں کے ساتھ جنسی زیادتی کرنے والوں کے ساتھ اسلامی قوانین کے مطابق سزا دی جانی چاہئے۔

Tags: