111 ارب وپے کی ٹیکس چوری ایف بی آر نے کے الیکٹرک کے ریکارڈ کی چھان بین شروع کردی

November 5, 2015 6:02 pm0 commentsViews: 77

کے الیکٹرک نے صارفین سے بلوں کے ساتھ سیلز ٹیکس کی مد میں کھربوں روپے وصول کئے مگر رقم ایف بی آر میں جمع نہیں کرائی
ٹیکس بچانے کیلئے انکم ٹیکس گوشواروں میں 76 ارب 83 کروڑ 31 لاکھ روپے کم ریونیو ظاہر کیا گیا‘ ٹرانسپرنسی انٹر نیشنل
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) فیڈرل بورڈ آف ریونیو نے 4میں 111 ارب کی  ٹیکس چوری کے معاملے پر کے الیکٹرک کے ریکارڈ کی چھان بین شروع کر دی ذرائع نے بتایا کہ ایف بی آر کو رپورٹ ملی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ کے الیکٹرک بڑے پیمانے پر مس ڈیکلریشن کر رہی ہے رپورٹ کے مطابق کے الیکٹرک نے ٹیکس ایئر 2012, 2011, 2009 اور 2013 کے دوران مجموعی طور پر111 ارب کی ٹیکس چوری کی۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ کے الیکٹرک نے  صارفین سے بلوں کے ساتھ سیلز ٹیکس کی مد میں کھربوں روپے وصول کئے  مگر یہ رقم ایف بی آر کو جمع نہیں کروائی۔ ذرائع نے بتایا کہ ٹرانسپرنسی انٹر نیشنل کی جانب سے ایف بی آر کو لکھے جانے والے خط میں کہا گیا ہے کہ کے الیکٹرک نے ٹیکس ایئر  2013ء کیلئے ایف بی آر میں جمع انکم ٹیکس گوشوارے میں اپنی سیل 1 کھرب 12 ارب 16 کروڑ 58 لاکھ 72 ہزار روپے ظاہر کی جبکہ سالانہ رپورٹ میں کے الیکٹرک نے اپنا ریونیو 1 کھرب88 ارب 99 کروڑ 90 لاکھ روپے ظاہر کیا ،۔ صرف ٹیکس ایئر 2013ء میں کے الیکٹرک نے ٹیکس بچانے کیلئے انکم ٹیکس گوشواروں میں76 ارب 83 کروڑ 31 لاکھ 28 ہزار روپے کم ریونیو ظاہر کیا۔ رپورٹ کے مطابق کے الیکٹرک کے درجنوں رجسٹرڈ صنعتی صارفین سیلز ٹیکس کے ان پٹ ریفنڈ  کلیم کر چکے ہیں۔

Tags: