IMF کو یقین دہانی شہریوں پر 40 ارب روپے کے مزید ٹیکس لگائے جائیں گے

November 6, 2015 1:20 pm0 commentsViews: 31

نئے ٹیکسوں سے ریونیو میں ہونے والے شارٹ فال کو پورا کیا جائے گا‘ وزیر خزانہ نے منی بجٹ لانے پر وزیراعظم کو اعتماد میں لے لیا
502 ملین ڈالر کی اگلی قسط کیلئے معاہدے کے قریب پہنچ چکے ہیں‘ مشن سربراہ کی اسحاق ڈار کے ہمراہ پریس کانفرس
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) وفاقی حکومت نے آئی ایم ایف سے502 ملین ڈالر کی اگلی قسط کے حصول کو یقینی بنانے کیلئے عالمی مالیاتی ادارے کو40 ارب روپے کے مزید ٹیکس لگانے کی یقین دہانی کرا دی جبکہ وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے آئی ایم ایف کو پاکستان میں نئے ٹیکس نافذ کرنے کے حوالے سے آگا ہ کرنے سے قبل وزیر اعظم نواز شریف کو نئے ٹیکس کی صورت میں منی بجٹ لانے پر اعتماد میں لیا، نئے ٹیکسوں سے حاصل ہونے والی آمدنی سے ریونیو میں ہونے والے شارٹ فال کو پورا کیا جائے گا۔ آئی ایم ایف نے پاکستان کی طرف سے دو شرائط سہ ماہی بنیاد پر بجٹ خسارے کا ہدف 306 ارب روپے اور خالص ملکی اثاثوں کا اضافہ نہ کرنے پر اہداف پر نظر ثانی کی ہے۔ آئی ایم ایف جائزہ مشن کے سربراہ ہیر لڈ فنگر نے کہا کہ پاکستانی حکام اور بین الاقوامی مالیاتی فنڈ مشن 502 ملین ڈالر کی اگلی قسط کیلئے معاہدے کے قریب پہنچ چکے ہیں جس کے تحت9 واں اقتصادی جائزہ مکمل کیا جائے گا، وزیر خزانہ اسحاق ڈار کے ساتھ پریس کانفرنس کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ یہ معاہدہ آئی ایم ایف بورڈ کی منظوری سے مشروط ہے جس کا اجلاس15 دسمبر کو ہوگا۔ اسحاق ڈار سے نئے ٹیکسوں کے اقدامات کے حوالے سے پوچھا گیا تو انہوں نے کہا کہ حکومت نومبر میں ریونیو کی وصولی کو دیکھ کر فیصلہ کرے گی، اگر ضرورت ہوئی تو حکومت مختلف مدوں میں دی جانے والی رعایتوں کو واپس لے گی، حکام نے بتایا کہ40 ارب کے ریونیو کی وصولی کیلئے حکومت اگلے ماہ ٹیکسوں کے حوالے سے اقدامات کا اعلان کر سکتی ہے۔

Tags: