پول مافیا شہر میں ہو نے والے کروڑوں روپے کے ترقیاتی کام مشکوک

November 9, 2015 5:39 pm0 commentsViews: 29

پکچر اور کلری نالے کے 50کروڑ روپے سے زائد لاگت کے کاموں کے اخراجات میں مزید اضافہ کرانے کی تیاری
وزیر بلدیات اور ایڈمنسٹریٹر فوری نوٹس لیں‘ نالوں کی پری کوالیفیکشن کے خلاف جدوجہد کرینگے‘ کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن
کراچی(سٹی رپورٹر)بلدیہ عظمیٰ کراچی میں پول مافیا سرگرم ،با اثرٹھیکیداروں کاترقیاتی منصوبے ہتیانے کا منصوبہ کھٹائی میں پڑ گیا ،ٹھیکیداروں نے ہی بھانڈہ پھوڑ دیا،کروڑوں روپے لاگت کے ترقیاتی کام مشکوک ہوگئے،بااثر ٹھیکیداروں کا چھوٹے ٹھیکیداروں پربڑے کاموں کے ٹھیکوں سے دور رہنے کے لیے دبائو ،تفصیلات کے مطابق کراچی کے سینئر کنٹریکٹرز نے کروڑوں روپے لاگت کے پچر اور کلری نالے کی تعمیر کے ٹینڈرز کو مشکوک قرار دیدیا ہے اور اس حوالے سے وزیر بلدیات ،ایڈ منسٹریٹر کراچی سجاد حسین عباسی اور ڈی جی ٹیکنیکل سروسز سے مذکورہ ٹھیکوں کیے لئے کی گئی پری کوالیفکیشن کو قوانین کے خلاف قرار دیتے ہوئے اسے فوری ختم کر کے تمام ٹھیکیداروں کو پکچر اور کلری نالے کے ٹینڈرز میں حصہ لینے کا اہل قرار دینے کا مطالبہ کیا ہے،واضح رہے کہ گذشتہ دنوں 5نومبر کو مذکورہ دونوں منصوبوں کے ٹینڈر اوپن کئے جانے تھے جس کیلئے ٹھیکیداروں کی جانب سے دو روز قبل ہی پول کرلیا گیا تھا ،پول کے حوالے سے ذرائع ابلاغ کی نشاندہی اور کنٹریکٹرز کی حکومتی خزانے کو کروڑوں روپے کا چونا لگانے کی سازش بے نقاب کئے جانے کے بعد مذکورہ ٹینڈر اوپن کرنے کی تاریخ میں توسیع کردی گئی تھی، ذرائع کا کہنا ہے کہ 12نومبر کو مذکورہ ٹینڈر دوبارہ اوپن کرنے کی تاریخ دی گئی ہے جس پر شہر کی ترقی میں حصہ لینے والے سینئر کنٹریکٹرز نے تشویش کا اظہار کرتے ہوئے مذکورہ دونوں ٹینڈر کیلئے کی گئی پری کوالیفیکشن کو خلاف قانون قرار دیا ہے اور خدشہ ظاہر کیا ہے کہ جو کام5نومبر کو نہیں ہوسکا وہ 12نومبر کو کامیاب ہوسکتا ہے جس کیلئے وزیر بلدیات ایڈ منسٹریٹر اور ڈی جی ٹیکنیکل سروسز سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا گیا ہے جبکہ دوسری طرف کنٹریکٹرز کی نمائندہ تنظیم کراچی کنٹریکٹرز ایسوسی ایشن نے پکچر اور کلری نالے کی تعمیر کیلئے کی گئی پری کوالیفیکیشن کے خلاف جدوجہد تیز کرنے اور اعلیٰ حکام کو خطوط ارسال کرنے کا فیصلہ کیا ہے۔

Tags: