سیکورٹی خدشات ٹریفک اہلکاروں کی راتوں میں ٹرک ڈرائیوروں سے وصولیاں

November 11, 2015 5:24 pm0 commentsViews: 21

کورنگی انڈسٹریل ایریا اور دیگر صنعتی علاقوں میں درجنوں ٹریفک اہلکار ڈیوٹی ختم ہونے کے باوجود سڑکوں پر کھڑے رہتے ہیں
آئی جی سندھ شام ساڑھے 7 بجے کے بعد ٹریفک ڈیوٹی پر پابندی لگا چکے ہیں مگر اہلکاروں نے رات کو ناکے لگانا معمول بنالیا
کراچی( نیوز ڈیسک) ٹریفک پولیس نے رشوت اور بھتہ خوری کیلئے سخت سیکورٹی خدشات کے باوجود آئی جی سندھ کے شام ساڑھے7 بجے کے بعد ڈیوٹی نہ کرنے کے احکامات کی دھجیاں اڑا دیں۔  شہر کے اہم صنعتی علاقے کورنگی سمیت دیگر علاقوں  میں رات گئے ٹریفک پولیس اہلکار ناکہ لگا کر ٹرک اور ٹریلر سے نذرانہ وصول کرنے میں مصروف رہتے ہیں۔ تفصیلات کے مطابق شہر قائد میں پولیس اہلکاروں کی ٹارگٹ کلنگ  میں اضافے کے بعد آئی جی سندھ نے شام ساڑھے7 بجے کے بعد ٹریفک پولیس اہلکاروں کو سڑکوں پر ڈیوٹی دینے پر پابندی لگا دی تھی تاہم رشوت خوری کی عادت سے مجبور اہلکاروںنے تمام سیکیورٹی خدشات اور پابندیوں کو بالائے طاق رکھتے ہوئے اپنی جیبیں گرم رکھنے کیلئے رات گئے تک سڑکوں پر ناکے لگانا معمول بنا لیا ہے۔ کورنگی انڈسٹریل ایریا  میں واقع ویٹا چورنگی، بروکس چورنگی، قیوم آباد اور سہراب گوٹھ سمیت دیگر علاقوں میں درجنوں اہلکار ڈیوٹی ختم ہونے کے باوجود سڑکوں پر کھڑے نظر آتے ہیں۔ ذرائع نے بتایا کہ ٹریفک پولیس کے اہلکار صرف2 شفٹو ں میں ڈیوٹی انجام دیتے ہیں اور شام ساڑھے7 بجے ان کی دوسری شفٹ بھی ختم ہوجاتی ہے۔ ذرائع نے انکشاف کیا کہ ڈیوٹی ختم ہونے کے بعد ٹریفک پولیس کے اہلکار چوکیوں میں اسلحہ جمع کروانے کے بعد بمعہ وردی اور موبائل دوبارہ سڑکوں پر نمودار ہوجاتے ہیں ذرائع نے کہا کہ شہر میں تمام صنعتی علاقوں اور بندرگاہ کے اطراف میں قائم ٹریفک پولیس چوکیوں کے اہلکار رات 8 بجتے سڑکوں پر ناکہ لگاتے ہیں اور سڑکوں سے گزرنے والے مال بردار ٹرکوں اور ٹرالروں سے بھتہ وصول کرتے ہیں بھتے کی عدم ادائیگی پر اہلکاروںکی جانب سے گرفتار کرنے کی دھمکیاں بھی دی جاتی ہیں۔

Tags: