کابل میں داعش کیخلاف ہزاروں افراد کا احتجاجی مظاہرہ

November 12, 2015 8:06 pm0 commentsViews: 37

20 ہزار سے زائد مظاہرین نے مرنیوالوں کے تابوتوں کے ہمراہ صدارتی محل میں داخل ہونے کی کوشش
سیکورٹی فورسز کی فائرنگ،8 افراد زخمی، حکومت کیخلاف شدید نعرے بازی، مظاہرین میں بچے اور خواتین بھی شامل
کابل( یو پی پی) افغان دار الحکومت کابل میں ہزاروں افراد نے داعش کے ہاتھوں7 شہریوں کے قتل کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا مشتعل مظاہرین نے صدارتی محل میں داخل ہونے کی کوشش کی جس پر پولیس کی مبینہ فائرنگ سے8 افراد زخمی ہوگئے۔ غیر ملکی میڈیا رپورٹس کے مطابق بدھ کو افغان دار الحکومت کابل میں خراب موسم کے باوجود20 ہزار سے زائد افراد جس میں خواتین اور بچے بھی شامل تھے نے زابل میں داعش کے ہاتھوں7 شہریوںکے قتل کے خلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرین نے داعش کے ہاتھوں قتل ہونے والے شہریوں کی لاشوںکے تابوت اٹھا رکھے تھے اور وہ حکومت کے خلاف نعرے بازی کر رہے تھے۔ مشتعل مظاہرین نے صدارتی محل کی جانب بھی مارچ کیا اور اندر داخل ہونے کی کوشش کی اس دوران پولیس اور سیکورٹی فورسز نے مظاہرین کو منتشر کرنے کیلئے فائرنگ کی جس کے نتیجے میں8 مظاہرین زخمی ہوگئے۔ مظاہرین نے پولیس پر پتھرائو کیا مظاہرین نے صدر اشرف غنی اور چیف ایگزیکٹو عبداللہ عبداللہ کے استعفے کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ حکومت عام آدمی کے جان و مال کے تحفظ میںمکمل طور پر ناکام ہو چکی ہے اسے اقتدار میں رہنے کا کوئی حق نہیں۔

Tags: