معاملہ سنگین ہوگیا مون گارڈن کے رہائشیوں نے سڑک پر ڈیرے ڈال دیئے

November 12, 2015 8:06 pm0 commentsViews: 347

تنکا تنکا جمع کرکے تین سال میں قسطیں پوری کی تھیں اب قبضہ ملا تو خالی کرنے کا حکم دے دیا گیا‘ متاثرین
یمن سے محصور ہوکر پاکستان آکر دوبارہ بے گھر ہو گئی بیمار نوجوان نے جان دینے کا اعلان کردیا
کراچی( اسٹاف رپورٹر) گلشن اقبال میں قائم متنازع مون گارڈن کا معاملہ سنگین ہوگیا۔ رہائشیوں نے فلیٹ خالی کرکے سڑک پر ڈیرے ڈال دیئے، یمن سے محصور ہو کر پاکستان پہنچنے والی خاتون دوبارہ بے گھر ہوگئی، نوجوان نے بیماری کی حالت کے باوجود جان دینے کا اعلان کر دیا۔ تفصیلات کے مطابق گلشن اقبال کے علاقے بلاک نمبر10 میں قائم مون گارڈن جو کہ ریلوے کے ملازمین کیلئے مختص زمین پر لینڈ مافیا نے قبضہ کر کے تعمیرکیا تھا۔ جس کو ریلوے حکام نے اعلیٰ عدالت میں چیلنج کیا جس پر عدالتی حکم پر فلیٹ خالی کروائے جانے کا عمل جاری ہے۔ بدھ کی شب مون گارڈن کے تمام رہائشی باہر نکل آئے اور سڑک پر ڈیرے ڈال دئیے۔ متاثرین کا کہنا تھا کہ انہوں نے تنکا تنکا جمع کرکے 3 سال میں اقساط پوری کیں اور اب 3 سال بعد فلیٹ خالی کرنے کا حکم جاری کر دیا گیا۔ متاثرین میں شامل ایک خاتون مہوش نے بتایا کہ وہ یمن جنگ میں محصور ہو گئی تھیں اور اپنا سب کچھ چھوڑ کر پاکستان آکر مون گارڈن میں رہائش اختیار کی اور اب ایک بار پھر وہ بے گھر ہوگئی ہیں۔ اسی دوران ایک بیمار نوجوان نے عزم ظاہر کیا کہ وہ اپنی جان دے گا مگر اپنی ماں کو بے گھر نہیں ہونے دے گا۔ مہوش نے وزیر اعظم پاکستان سے نوٹس لینے کی اپیل کی ہے اور کہا ہے کہ بلڈر مافیا اور سندھ حکومت کے محکموں میں موجود کرپٹ افسران کے خلاف کارروائی کے بجائے مکینوں کو بے دخل کیا جا رہا ہے۔