بھارت کا اہم پاکستانی تنصیبات پر حملوں کا منصوبہ افغانستان میں القاعدہ ‘ داعش اور طالبان سے گٹھ جوڑ

November 16, 2015 5:16 pm0 commentsViews: 31

بھارتی سفارتی عملے کا اعلیٰ سطح اجلاس‘ ایئر پورٹس‘ غیر ملکی سفارتخانوں میںبھی حساس مقامات سمیت بڑے شہروں میں دہشتگردی کی منصوبہ بندی کرلی
10 سے 12 شدت پسند پاکستان میں داخل‘ حساس اداروں کو تفصیلات ملنے پر تمام مقامات پر سیکورٹی الرٹ کردی گئی‘ چین کا سفارتخانہ سرفہرست
لاہور( نیوز ڈیسک) معتبر ذرائع سے معلوم ہوا ہے کہ افغانستان میں بھارتی سفارتی عملے نے القاعدہ، داعش اور کالعدم تحریک طالبان کا اعلیٰ سطحی اجلاس منعقد کرایا ہے۔ اجلاس میں پاکستان کے ایئر پورٹس، غیر ملکی سفارتخانوں، حساس مقامات، لاہور، اسلام آباد، اور کراچی جیسے اہم شہروں میں دہشت گردی کی منصوبہ بندی کی گئی جس کے بعد10 سے 12 شدت پسند پاکستان روانہ کر دئیے ہیں۔ پاکستان کے حساس اداروں نے دشمنوں کی اس منصوبہ بندی کی تفصیلات حاصل کرکے ملک بھر میں ایئر پورٹس، سفارتخانوں اور حساس مقامات کی سیکورٹی کے انتظامات کا از سر نو جائزہ لے کر سیکورٹی کو ہائی الرٹ کر دیا ہے۔ ذرائع کے مطابق بھارت کی قومی سلامتی کے مشیر اور مودی سرکار کے معاون خصوصی اجیت ڈول کی ہدایت پر داعش اور دیگر تنظیموں کا اجلاس 7 اکتوبر کو بلایا گیا جس میں پاکستان کے ایئر پورٹس، غیر ملکی قونصل خانوں، چین اورکینیڈا کے ہائی کمیشن، لاہور کے لال پل اور دیگر حساس مقامات کو اڑانے کی منصوبہ بندی کی گئی۔ اجلاس میں یہ فیصلہ ہوا کہ شدت پسند اپنی کارروائیوں میں لینڈ کروزر استعمال کریں کیونکہ غیر ملکی سفارتکار لینڈ کروزر استعمال کرتے ہیں اس طرح شدت پسند اپنے اہداف کو نشانہ آسانی سے بناسکتے ہیں۔ وزارت داخلہ نے مراسلے کے ذریعے ملک بھر میں ہائی الرٹ جاری کر دیا اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کو سیکورٹی کے انتظامات سخت کرنے کی ہدایت کی ہے۔ جبکہ لینڈ کروزر گاڑیوں کی چیکنگ کرنے کی بھی ہدایت کی گئی۔

Tags: