لڑکوں سے جنسی زیادتی کے واقعات میں اضافہ ہو گیا

November 19, 2015 3:10 pm0 commentsViews: 33

رواں برس150 لڑکیوں کے مقابلے میں174 لڑکوں کو جنسی درندگی کا نشانہ بنایا گیا ہے، ممتاز گوہر
والدین بدنامی کے خوف سے واقعات رپورٹ نہیں کراتے، خواتین پر بھی جنسی حملوں میں خطرناک اضافہ ہوا، رپورٹ
اسلام آباد( اے ایف پی) پاکستان میں رواں سال لڑکیوں کے مقابلے میں لڑکوں سے جنسی زیادتی کے واقعات میں اضافہ ہوا۔ بچوں سے جنسی زیادتی پر کام کرنے والی ایک غیر سرکاری اور نگران تنظیم ’’ساحل ‘‘ کے مشاہدے میں بتایا گیا کہ2015ء کے پہلے6 ہفتوں میں6 سے10 سال کی عمر کے لڑکوں کے ساتھ پچھلے سال کے اسی عرصے کی نسبت زیادتی کے واقعات میں4.3 فیصد اضافہ دیکھا گیا۔ اس عمر کے178 لڑکوں کے ساتھ ایسے واقعات رپورٹ ہوئے جبکہ لڑکیوں میں یہ تعداد150 رہی۔ ساحل کے ترجمان ممتاز گوہر نے وجہ بتائی کہ عام طور پر لڑکے گھروں سے زیادہ باہر نکلتے ہیں لہٰذا انہیں نشانہ بنانا آسان ہوتا ہے۔ جبکہ بہت سے والدین بدنامی کے خوف سے لڑکیوں کے ساتھ ہونے والی ریپ رپورٹ نہیں کرتے۔ دوسری جانب خواتین پر جنسی حملوں میں بھی خطرناک حد تک اضافہ دیکھا گیا۔ رپورٹ کے مطابق رواں سال جنوری سے جون تک102ایسے کیس ریکارڈ پر آئے جو پچھلے سال کے اسی عرصے سے5 گنا زیادہ ہیں۔

Tags: