شہر میں تمام فلک بوس عمارتوں پر تعمیراتی کام بند کرنے کا حکم، بلڈر میں کھلبلی

November 23, 2015 3:16 pm0 commentsViews: 35

پروجیکٹ مالکان نے ابھی تک پاک فضائیہ اور سول ایوی ایشن کے اجازت نامے جمع نہیں کرائے، سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی
تعمیراتی صنعت پر پابندی لگانے سے لاکھوں افرا کا روزگار متاثر ہوگا،ایسوسی ایشن آف بلڈرز کا اجلاس
کراچی( نیوز ڈیسک) سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی نے کراچی کی تمام فلک بوس عمارات پر تعمیرات کا کام بند کرنے کا حکم جاری کر دیا ہے۔ پروجیکٹس مالکان سے 7 دن کے اندر پاک فضائیہ اور سول ایوی ایشن کی این او سی طلب کر لی گئی ہیں۔ اور واضح کیا گیا ہے کہ حکم عدولی کی صورت میں پروجیکٹس منہدم اور سر بمہر کر دیئے جائیں گے۔ یہ کارروائی شہر کے70 بڑے پروجیکٹس کے خلاف کی جائے گی جن میں 6 منزلہ سے لے کر62 منزلہ تک کے تجارتی، رہائشی اور فلاحی پروجیکٹس شامل ہیں۔ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کے جاری کردہ شو کاز نوٹس کے مطابق پروجیکٹس مالکان سے کہا گیا ہے کہ ان کے پروجیکٹ کے پلان اس شرط پر منظور کئے گئے تھے کہ آپ فضائیہ اور سول ایوی ایشن سے این او سی لا کر جمع کرائیں گے کہ ان دونوں اہم اداروں کو پروجیکٹ کی تعمیر پر کوئی اعتراض نہیں ہے لیکن مطلوبہ اجازت نامے ابھی تک جمع نہیں کرائے گئے ہیں اور پروجیکٹ کی تعمیر کا کام جاری ہے لہٰذا تعمیراتی کام فوری طور پر بند کردیا جائے۔ 7 دن میں پی اے ایف اور سول ایو ی ایشن کی این او سی جمع کرائی جائیں بصورت مروجہ قوانین کے مطابق پروجیکٹ کی انہدامی کارروائی کی جائے گی اور پروجیکٹ کو سر بمہر کر دیا جائے گا، اس حوالے سے با خبر ذرائع نے بتایا کہ سندھ بلڈنگ کنٹرول اتھارٹی کی جانب سے تعمیراتی صنعت کا پہیہ جام کرنے پر ملک کے بڑے بڑے بلڈرز اینڈ ڈیویلپرز میں کھلبلی مچ گئی ہے، ایسوسی ایشن آف بلڈرز اینڈ ڈیولپرز نے آباد ہائوس میں خصوصی اجلاس منعقدہ کیا گیا اور آئندہ کا لائحہ عمل طے کیا گیا۔ چیئر میں آباد حنیف گوہر نے کہا کہ تعمیرات صنعت پر پابندی سے لاکھوں لوگوں کا روزگار متاثر ہوگا کیوں کہ اس صنعت سے100 صنعتیں منسلک ہیں۔

Tags: