ایس جی ایس کو ٹیکناکیس میں آصف زرداری باعزت بری

November 25, 2015 3:59 pm0 commentsViews: 38

سابق صدر کیخلاف نیب شواہد اور ثبوت فراہم کرنے میں ناکام رہا، جج کے ریمارکس
سیف الرحمن نے سیاسی انتقام میں جھوٹے مقدمات درج کیے،8 سال قید کا حساب کون دیگا، فاروق نائیک
اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) احتساب عدالت اسلام آباد نے سابق صدر آصف علی زراری کو ایس جی ایس اور کوٹیکنا ریفرنسز میں نیب کے پاس اصل دستاویزات نہ ہونے پر با عزت بری کر دیا ہے۔ گزشتہ روز احتساب عدالت کے جج محمد بشیر نے سابق صدر کی بریت کی درخواست پر سماعت کرتے ہوئے محفوظ فیصلہ سنایا، عدالتی فیصلے میں جج محمد شبیر نے کہا کہ نیب آصف زرداری کے خلاف دونوں ریفرنسز میں ٹھوس شواہد فراہم کرنے میں ناکام رہا۔ نیب کے پاس ریفرنسز کی اصل دستاویزات تک موجود نہیں جبکہ دونوں ریفرنسز کے مرکزی ملزمان پہلے ہی بری ہو چکے ہیں سابق صدر آصف علی زرداری پر الزام تھا کہ انہوں نے بینظیر بھٹو کے دور حکومت میں حکومتی ملکی کمپنیوں کو پری شپمنٹ ٹھیکے دلوانے میں اپنا اثر و رسوخ استعمال کیا اور کمیشن وصول کیا۔ فاروق ایچ نائیک نے بریت کی درخواست میں موقف اختیار کیا کہ نیب کے پاس ریفرنس کی اصل دستاویزات موجود نہیں، تفتیشی افسر نے بھی اصل دستاویزات نہیں دیکھیں لہٰذا ملزم کو با عزت بری کیا جائے۔ عدالتی فیصلے کے بعد آصف علی زرداری کے وکیل فاروق ایچ نائیک نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سیف الرحمن نے سیاسی انتقام لینے کیلئے کیسز بنائے اور عدالت میں جھوٹے کاغذات جمع کرائے گئے۔ آصف زرداری کے8 سال قید ہونے کا حساب کون دیگا۔

Tags: