50ارب روپے کی کرپشن۔۔۔ نیب نے ڈاکٹر عاصم کو تحویل میں لینے کا فیصلہ کرلیا

November 25, 2015 4:00 pm0 commentsViews: 18

آج یا کل احتساب عدالت میں پیش کرنے کے لیے تمام قانونی تقاضے پورے کرلیے گئے
سیکورٹی خدشات کے باعث ڈاکٹر عاصم کو میٹھارام کی سب جیل میں رکھاجائے گا
کراچی(کرائم ڈیسک)سابق صدر آصف علی زرداری کے قریبی دوست ڈاکٹر عاصم حسین کی پریشانیوں میں کمی واقع نہیں ہوئی۔ رینجرز کے بعد نیب نے ڈاکٹر عاصم کو 50ا رب روپے کی کرپشن کے 13 مقدمات میں 90 دن کے لیے تحویل میں لینے کا فیصلہ کیا ہے۔ اس ضمن میں وارنٹ گرفتاری بھی جاری کردیے گئے ہیں۔ باخبر ذرائع کے مطابق رینجرز اور نیب کے اہلکار مشترکہ طور پر ڈاکٹر عاصم کو سخت سیکورٹی میں آج یا کل احتساب عدالت کراچی میں پیش کریں گے جس کے لیے تمام قانونی تقاضے پوری کیے جارہے ہیں۔ اس حوالے سے مجاز حکام نے نیب کے تفتیش کاروں کو سب جیل میٹھا رام میں ڈاکٹر عاصم سے تحقیقات کرنے کی اجازت دے دی ہے۔ خدشات کی بناء پر ڈاکٹر عاصم کو میٹھارام کی سب جیل میں ہی رکھا جائے۔ سینئر افسر نے بتایا کہ قانون کے مطابق نیب کے تفتیش کار پہلی مرتبہ ڈاکٹر عاصم حسین کو احتساب عدالت میں پیش کرکے10سے 15دن کا ریمانڈ حاصل کریں گے۔ جس کے بعد توسیع کی درخواستوں کے ذریعے ڈاکٹر عاصم کو 90روز تک تحویل میں رکھا جائے گا۔ نیب کے تفتیش کاروں نے ڈاکٹر عاصم کے خلاف 50 ارب روپے کی کرپشن کے 13مقدمات میں تحقیقات کرنی ہے۔ مقدمات میں وزارت پیٹرولیم میں کرپشن، من پسند افراد کو سی این جی اسٹیشنوں کے ٹھیکے دے کر کمیشن حاصل کرنا، اربوں روپے کی بیرون ملک منتقلی، کرپشن سے حاصل ہونے والی آمدن کا بٹوارہ کرکے اعلیٰ شخصیات کو فراہم کرنا، کمیشن کے عوض نجی کالجز کاپی ایم ڈی سی سے الحاق، غیرقانونی طریقے سے زمینوں کی الاٹمنٹ، نجی اسپتال کے لیے رفاہی پلاٹوں پر قبضے اور اختیارات کے غلط استعمال سمیت دیگر اہم نوعیت کے مقدمات شامل ہیں۔

Tags: