مزدور دشمن پالیسی اور نجکاری سے10لاکھ افراد بے روزگار ہوگئے

November 28, 2015 2:29 pm0 commentsViews: 25

ملک میں10سال سے مسلسل مزدوروں کا معاشی استحصال کیا جارہا ہے، حکومت نجکاری کی پالیسی پر نظر ثانی کرے
بی ایف یو جے کے تحت پریس کلب میں سیمینار،جسٹن (ر) رشید رضوی، حبیب جنیدی، فاضل جمیلی، امتیاز فاران ودیگر کاخطاب
کراچی( اسٹاف رپورٹر) مزدور رہنمائوں نے کہا ہے کہ مزدور دشمن پالیسیوں اور قومی اداروں کی نجکاری کے نتیجے میںگزشتہ10 سالوں میں10لاکھ سے زائد افرد بے روزگار ہوئے ہیں‘ پنجاب حکومت کو زلزلے سے متاثر ہونیوالی فیکٹریوں کی عمارتوں کا فوری طور پر معائنہ کرانا چاہئے‘ ان خیالات کااظہار مقررین نے پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹ اور مزدور فیڈریشن کے زیر اہتمام جمعہ کو کراچی پریس کلب میں سانحہ سندر اور مزدور کے حقوق کے عنوان پر منعقدہ سیمینا ر سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ سیمینار سے جسٹس ریٹائرڈ رشید اے رضوی ‘مزدور رہنما حبیب جنیدی‘ لیاقت ساہی‘ کرامت علی‘ منظور رضوی‘ ناصر منصور‘ مقدر زمان‘ خورشید عباسی‘ کراچی پریس کلب کے صدر فاضل جمیلی امتیاز خان فاران و دیگر نے خطاب کیا‘ مقررین کا کہنا تھا کہ ملک میں کئی سالوں سے مسلسل مزدوروں کا معاشی استحصال کیا جاتا جارہا ہے‘ حکومت نجکاری پالیسی پر نظر ثانی کرے‘ سانحہ بلدیہ ٹائون کے وفاقی حکومت سمیت تمام صوبائی حکومتوں کو ملک بھر میں آگاہی مہم شروع کرنی چاہئے تھی‘ مزدور دشمن پالیسیوں کے تحت قومی اداروں کی نجکاری کی جارہی ہے لیکن مزدور اپنے خلاف ہونیوالی تمام سازشوں کا ناکام بنادیں گے۔