کتوں اوربلیوں کو درآمدی خوراک کھلانے والوں کو ٹیکس دینا ہوگا، اسحاق ڈار

December 9, 2015 3:07 am0 commentsViews: 27

کوئی منی بجٹ نہیں آیا ،ملکی معاملات چلانے کے لئے بعض اوقات وقت پر فیصلہ کرنا سودمند ہوا کرتا ہے
ٹیکسوں کے حوالے سے 30نومبر کے اقدامات کے تحت 40ارب روپے مالیت کے 5ایس آراوز جاری کئے گئے
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) وزیر خزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ کوئی منی بجٹ نہیں آیا، اپنے کتے، بلیوں کو در آمدی خوراک کھلانے والوں کو ٹیکس دیناہوگا۔ پیر کو قومی اسمبلی میں پالیسی بیان دیتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ملکی معاملات چلانے کیلئے بعض اوقات وقت پر فیصلہ کرنا سود مند ہوا کرتا ہے۔ ٹیکسوں کے حوالے سے 30 نومبر کے اقدامات کے تحت 40 ارب روپے مالیت کے 5 ایس آر اوز جاری کئے گئے۔ گزشتہ2 سالوں کے دوران ٹیکسوں کی شرح نمو میں3 تا10 فیصد اضافہ ہوا ہے۔ رواں سال بھی ہم نے20 فیصد کا ٹارگٹ مقرر کیا ہے۔ یکم جولائی سے30 دسمبر تک پہلے کوارٹر میں40 ارب کا شارٹ فال تھا۔ ہمیں معیشت کو سیاست سے الگ کرکے دیکھنا چاہئے، بجٹ کے وقت ہم نے ارکان اسمبلی، سینیٹ اور میڈیا پر جہاں بھی اچھی تجویز آئی اسے شامل کیا ۔ 40 ارب کے شارٹ فال کو پورا کرنے کیلئے1400 آئٹمز میں سے ایک ایک پر ہفتوں غور کیا، ہمارے اس فیصلے کا اثر صرف در آمد کر دہ لگژری آئٹمز پر پڑے گا۔ مقامی اشیاء کی قیمتیں متاثر نہیں ہونگی، یہ فیصلہ کسٹم ایکٹ کے تحت کیا۔ امیر آدمی کو پیسہ ملک کو دینا ہے۔ لاکھوں افراد نے ہمارے امن کیلئے گھر چھوڑے، با عزت اور با وقار واپسی چاہتے ہیں۔ ہمیں پیٹ بھی کاٹنا پڑا تو کاٹیں گے، اسے منی بجٹ نہ کہا جائے ہم سب کو مل کر ملک کو آگے لے کر جانا چاہئے۔

Tags: