محکمے کو کارپوریشن بنانے کیخلاف،PIA ملازمین کے احتجاجی مظاہرے، پروازوں میں تاخیر

December 9, 2015 3:17 am0 commentsViews: 16

کراچی میں ملازمین کا ایئرلائنز ہیڈ آفس میں احتجاج، مسافروں کو بورڈنگ کارڈ بھی جاری نہ ہوسکے، فیصل آباد میں بھی مظاہرہ
اسلام آباد میں ایئرپورٹ میں جہاز کو سیڑھی لگانے سے انکار کے باعث مسافر جہاز میں پھنس گئے،ملازمین کا صدارتی آرڈیننس واپس لینے کا مطالبہ
کراچی، ملتان، اسلام آباد( اسٹاف رپورٹر، مانیٹرنگ ڈیسک) پی آئی اے کو کارپوریشن میں تبدیل کرنے کے فیصلے پر ملازمین سراپا احتجاج بن گئے فیصلے کے خلاف کراچی، فیصل آباد، اسلام آباد اور پشاور میں مظاہرے کئے گئے۔ کراچی میں ملازمین نے ایئر لائنز کے ہیڈ آفس میں احتجاج کیا اور نعرے لگائے، ملازمین کے کام چھوڑنے کے باعث چیک ان کائونٹر بھی بند رہا۔ مسافروں کو بورڈنگ کارڈ بھی جاری نہ ہو سکے کئی پروازیں لیٹ ہوگئیں، فیصل آباد میں بھی پی آئی اے ملازمین نے مظاہرہ کیا اور تمام شعبوں میں کام بند کرنے کی دھمکی دی۔ مظاہرین نے حکومتی فیصلے پر تنقید بھی کی۔ ملتان میں بھی ملازمین نے2 گھنٹے کی ہڑتال کی مسافروں کو پریشانی کا سامنا کرنا پڑا۔ پشاور کے باچا خان ایئر پورٹ پر بھی پی آئی اے ملازمین کی7 مختلف تنظیموں نے علامتی ہڑتال کی اور بازوئوں پر پٹیاں باندھیں ملازمین نے مظاہرہ کیا۔ نجکاری کے حوالے سے جاری صدارتی آرڈیننس کے خلاف ملازمین نے گزشتہ روز بینظیر بھٹو انٹر نیشنل ایئر پورٹ پر بھی مظاہرے اور جلسے کئے۔ آرڈیننس کے خلاف 2 گھنٹے کی ہڑتال بھی کی گئی اور اس دوران متعدد پروازیں تاخیر کا شکار ہوئیں۔ ملازمین نے مذکورہ آرڈیننس واپس لینے کا مطالبہ کیا علاوہ ازیں اسلام آباد ایئر پورٹ پر پی آئی اے کی پرواز پی کے368 جب اسلام آباد پہنچی تو اعلان کیا گیاکہ جہاز کو سیڑھی لگا کر مسافروں کو باہر نکالا جائے تاہم ملازمین نے ایسا کرنے سے انکار کر دیا اور مسافر اندر پھنس گئے۔ ذرائع کے مطابق پرواز میں خورشید شاہ، سابق وفاقی وزیر نوید قمر سمیت دیگر پارلیمنٹیرینز بھی موجود تھے۔ خورشید شاہ نے احتجاجی ملازمین کو جہاز کے اندر بلا لیا اور ملازمین نے جہاز میں داخل ہو کر بھی نعرے بازی جاری رکھی۔ خورشید شاہ نے ملازمین کو پی آئی اے کی نجکاری کا معاملہ قومی اسمبلی میں اٹھانے کی یقین دہانی کرائی جس پر ملازمین نے سیڑھی لگا کر مسافروں کو باہر نکالا۔

Tags: