پاکستان اور بھارت میں جامع مذاکرات کی بحالی پر اتفاق

December 10, 2015 1:08 pm0 commentsViews: 19

مذاکرات آگے بڑھانے کیلئے دونوں ممالک کے خارجہ سیکریٹریز کو کہہ دیا گیا جو شیڈول اور طریقہ کار طے کریں گے
اسلام آباد( مانیٹرنگ ڈیسک) پاکستان اور بھارت نے جامع مذاکرات کی بحالی پر اتفاق کیا ہے۔ اس حوالے سے کہا گیا ہے کہ کمپوزٹ کی بجائے کمپری ہینسو ڈائیلاگ ہونگے۔ ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم محمد نواز شریف اور بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج کی ملاقات کے بعد مشیر خارجہ سرتاج عزیز سشما سوراج نے مشترکہ پریس کانفرنس میں کیا۔ سرتاج عزیز نے کہا کہ دونوں ملکوں میں جامع مذاکرات کی بحالی پر اتفاق ہوا ہے۔ نئے سرے سے جامع مذاکرات کئے جائیں گے۔ سشما سوراج نے کہا کہ بھارت واپسی پر آج پارلیمنٹ میں پاکستان کے دورے پر واضح بیان دونگی، کمپوزٹ ڈائیلاگ کی جگہ کمپری ہینسو ڈائیلاگ ہونگے، کمپری ہینسو ڈائیلاگ میں وہ تمام باتیں شامل ہونگی جو کمپوزٹ ڈائیلاگ میں تھیں۔ ان مذاکرات میں کمپوزٹ کے علاوہ بھی کچھ چیزیں شامل کی جا سکتی ہیں۔ مذاکرات آگے بڑھانے کیلئے دونوں ممالک کے خارجہ سیکریٹریوں کو کہہ دیا گیا ہے کہ وہ بیٹھ کر ان مذاکرات کا شیڈول اور طریقہ کار طے کر لیں۔ دریں اثناء ملاقات میں وزیر اعظم نواز شریف اور بھارتی وزیر خارجہ سشما سوراج نے عداوتوں کو بھلا کر نئے سرے سے خوشگوار تعلقات قائم کرنے، علاقائی تعاون اور باہمی تجارت کو فروغ دینے پر اتفاق کیا ہے۔ وزیر اعظم نواز شریف نے بھارت کے ساتھ تمام تصفیہ طلب تنازعات مذاکرات سے حل کرنے کی خواہش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ خطے میں امن کیلئے دونوں ملکوں کو کردار ادا کرنا ہوگا۔ ہمسایہ ممالک کے ساتھ خوشگوار تعلقات ہمارا ویژن ہے۔ کشیدگی کے بجائے امن کو فروغ دینا ہوگا۔ جبکہ بھارتی وزیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان سے تجارت بڑھانا چاہتے ہیں وقت آگیا ہے کہ ہم ایک دوسرے سے تعلقات میں پختگی اور خود اعتمادی کا مظاہرہ کریں دنیا کی نظریں ہم پر ہیں اور پاک بھارت تعلقات تبدیلی کے منتظر ہیں۔ دنیا کو مایوس نہیں کرنا چاہتے۔