3جی4جی، جیلوں میں جیمرزناکارہ، دہشت گردی کا خطرہ

December 11, 2015 11:31 am0 commentsViews: 23

جدید ٹیکنالوجی کے باعث دہشت گردوں کیلئے موبائل فون پر رابطوں میں آسانی ہونے لگی ،سگنلز زیادہ طاقتو ر ہوگئے ہیں
اسلام آباد( نیوز ڈیسک) جدید ٹیکنا لوجی نے سہولتوں کے ساتھ بعض سنگین مسائل بھی پیدا کر دئیے محکمہ داخلہ کے ذرائع کے مطابق جدید ٹیکنا لوجی کے باعث ملک بھر کی جیلوں میں دہشت گردوں کی روک تھام کیلئے لگائے گئے جیمرز ناکارہ ہوگئے ہیں جبکہ یہ جیمرز اپ گریڈ نہ ہونے کے باعث جیلوں میں بند دہشت گردوں کے موبائل فون پر رابطوں میں آسانیاں پیدا ہوگئی ہیں۔ اس سہولت کے سبب جیلیں دہشت گردی کے حوالے سے غیر محفوظ ہوگئی ہیں۔ محکمہ داخلہ کے ذرائع نے بتایا کہ پاکستان میں 3G اور4G موبائل ٹیکنا لوجی آنے کے باعث ان کے سنگنلز کو کنٹرول کرنا صوبے کی جیلوں میں لگے جیمرز کے بس میں نہیں رہا۔ ذرائع نے بتایا کہ پرانی ٹیکنا لوجی میں موبائل ٹاور سے سگنلز 1700 میگا ہرٹنز فریکونسی کے تحت آتے تھے جسے موجودہ جیمرز کنٹرول کر لیتے تھے، لیکن موجودہ 3G اور4G ٹیکنا لوجی میں فریکونسی 2100 میگا ہرٹز پر ٹرانسفر ہونے سے سنگنلز زیادہ طاقتور ہوگئے ہیں جنہیں کنٹرول کرنا موجودہ جیمرز کیلئے ممکن نہیں رہا، ذرائع کے مطابق جیلوں میں قید ہائی پروفائل کریمنلز اور دہشت گردوں کو3G اور4G ٹیکنا لوجی کے آنے سے اپنے ساتھیوں کے ساتھ رابطے میں آسانی پیدا ہوگئی ہے۔ اس حوالے سے رابطہ کرنے پر جیل حکام نے بتایا کہ کسٹم کی اپ گریڈیشن کے بعد موبائل کمپنیوں اور پاکستان ٹیلی کام اتھارٹی کو بار ہا اپنے تحفظات سے آگاہ کیا گیا لیکن پی ٹی اے اور موبائل کمپنیوں نے اس حساس معاملے پر تاحال کوئی کارروائی نہیں کی۔