کرپشن کوئی نئی بات نہیں وفاق نے سندھ پر چڑھائی کر رکھی ہے، وزیراعلیٰ سندھ

December 12, 2015 3:51 pm0 commentsViews: 30

نیب کے روز افزوں چھاپوں سے حکومتی مشینری کی کارکردگی متاثر ہورہی ہے اور ایسی کارروائیاں سندھ حکومت کو ناکام کرنے کی کوشش ہے
افسوس رینجرز نے کرپشن کے خلاف مہم کا آغاز کردیا ہے، خود کو احتساب کے لئے پیش کرتا ہوں، قائم علی شاہ کا سیمینار سے خطاب
کراچی( اسٹاف رپورٹر) وزیر اعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے اعتراف کیا کہ سندھ میں کرپشن بہت ہے جو دو سال میں ختم نہیں ہو سکتی اس کے لئے طویل عرصہ درکار ہے۔ احتساب کیلئے نیا قانون بنایا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ کرپشن کوئی نئی بات نہیں لیاقت علی خان کے دور کے بعد سے ہی کرپشن کا آغاز ہوا اور یہ غیر منتخب حکومتوں میں بھی جاری رہی اور بالآخر ایوب خان نے مارشل لاء نافذ کر دیا اور جنرل ضیاء کے دور میں بھی کرپشن پروان چڑھی۔ وزیر اعلیٰ نے وفاقی حکومت کو کڑی تنقید کا نشانہ بنایا اور کہا کہ وفاق سندھ پر حملہ آور ہے۔ ایف آئی اے اور نیب جیسے اداروں نے سندھ پر چڑھائی کر دی ہے اور ان کے روز روز کے چھاپوں سے حکومتی مشینری کی کارکردگی متاثر ہو رہی ہے ایسی کارروائیاں سندھ حکومت کو بد نام کرنے کی کوشش ہیں ایف آئی اے کو صوبائی کیسز میں مداخلت کا کوئی اختیار نہیں ہے اور وزیر اعلیٰ نے ایف آئی اے کو مشورہ دیا کہ خدا کے واسطے وہ اپنے دائرہ اختیار میں رہے رینجرز کے اختیارات ہیں تاہم افسوس ہے کہ انہوں نے کرپشن کے خلاف مہم کا آغاز کر دیا ہے تاہم انہوں نے رینجرز کے کردار کو سراہا۔ ان خیالات کا اظہار سید قائم علی شاہ نے جمعہ کو وزیر اعلیٰ ہائوس میں محکمہ اینٹی کرپشن کے تحت منعقدہ سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ ا س موقع پر اے پی این ایس کے صدر حمید ہارون، چیئر مین اینٹی کرپشن، ڈی جی نیب، ڈاکٹر آئی بی اور صوبائی محتسب و دیگر نے بھی خطاب کیا۔ وزیر اعلیٰ سندھ نے کہا کہ کرپشن کو جڑ سے اکھاڑ پھینکنے کیلئے مختلف طریقہ کار اپنانے کی ضرورت ہے انہوں نے اپنے آپ کو احتساب کیلئے پیش کرتے ہوئے کہا کہ میں گزشتہ40برس سے سیاست کر رہا ہوں اے پی این ایس کے صدر حمید ہارون نے کہا کہ کرپشن نا اہلی، جہالت ، غربت اور غیر موثر حکمرانی کا نتیجہ ہے۔ کرپشن سندھ میں ہی نہیں بلکہ پورے ملک میں ہے اس لئے حکومت کو ذرائع ابلاغ کے ذریعے لوگوں کو اطلاعات کی رسائی کا حق دینا ہوگا اور حکومت کے ہر فیصلے عوام میں ہوں، چیئر مین اینٹی کرپشن سید ممتاز علی شاہ نے کہا کہ گزشتہ چار ماہ کے دوران 167 ایف آئی آر درج کی گئی اور اس دوران100 سے زائد کرپٹ لوگوں کو گرفتار کیا گیا۔