جمشید کوارٹرز میں ہارڈویئر کی دکان پر دہشت گردوں کا ہدف پولیس اہلکار تھا

December 12, 2015 4:49 pm0 commentsViews: 39

پولیس نے واقعہ کا مقدمہ دہشت گردی ایکٹ کے تحت درج کرلیا، شہید اہلکار کی نماز جنازہ میں پولیس افسران کی شرکت
ہیڈکانسٹیبل زاہد سعید کو کافی عرصے سے دھمکیاں مل رہی تھیں مقتول کے بھائیوں کا بیان
کراچی(کرائم رپورٹر)جمشید کوارٹرزمیں گذشتہ روز ہارڈوئیر کی دکان پر دہشتگردوں کا ہدف پولیس اہلکار تھا،پولیس نے واقعہ کا مقدمہ انسداد دہشتگردی ایکٹ کے تحت درج کرلیا ،شہید کی نماز جنازہ میں پولیس افسران اور اہل محلہ کی بڑی تعداد نے شرکت کی اس دوران علاقے کی دکانیں جزوی طورپر بند رہی ۔تفصیلات کے مطابق گذشتہ روز جمشید کوارٹر کے علاقے مارٹن کوارٹرز میں قائم کاشف ہارڈوئیر کی دکان پر دہشتگردوں کا ہدف ہیڈ کانسٹیبل زاہد سعید تھا ،دہشتگردوں نے زاہد کے ہمراہ اسکے والد سعیداور بھائی کاشف بھی زخمی ہوئے تھے ،قائممقائم ایس ایچ او یوسف جمال نے بتایاکہ دہشتگردوں کی فائرنگ سے شہید ہونے والے پولیس ہیڈ کانسٹیبل زاہد کی نمازے جمعہ کے روز مارٹن کوارٹر میں بعد نماز عصر ادا کی گئی اور مقامی قبرستان میں سپردخاک کردیا گیا ،نماز جنازہ میں پولیس کے اعلی افسران کے علاوہ اہل محلہ نے بڑی تعداد میں شرکت کی ، اس دوران علاقے کی دکانیں اور مارکیٹ بھی جزوی طور پر بند تھی ،شہید زاہد سعیدپی آئی بی تھانے کی حدود نفیس آباد کا رہائشی تھا ،ذرائع کا کہنا ہے کہ شہید اہلکار انویسٹی گیشن ون سائوتھ میں تعینات تھا اور مختلف کیسز پر تفتیشی افسران کے ساتھ تفتیش کررہا تھا ،اسکے بھائیوں کا کہنا ہے کہ زاہد کو کافی عرصے سے دھمکیاں مل رہی تھیں۔