بلوچستان سے ملحقہ اضلاع میں پولیس اسٹیشن قائم کرنے کی ہدایت

December 12, 2015 4:54 pm0 commentsViews: 35

سانحہ شکار اورجیکب آباد کے متاثرین کو ایک ہفتے میں معاوضہ ادا کیا جائے
دہشت گردی کے خلاف سندھ اور بلوچستان کی پولیس مشترکہ حکمت عملی تشکیل دیں، وزیراعلیٰ سندھ
کراچی( اسٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ نے آئی جی سندھ پولیس کو ہدایت کی ہے کہ وہ بلوچستان کی صوبائی حکومت سے رابطہ کرکے دہشت گردی کیخلاف سندھ اور بلوچستان کی مشترکہ حکمت عملی تشکیل دیں‘ بلوچستان سے کوئی بھی دہشت گرد سندھ میں داخل نہ ہوسکے‘ انہوں نے اعلان کیا ہے کہ سانحہ شکار پور اور سانحہ جیکب آباد کے شہداء کی یادگار تعمیر کرنے کام دو ہفتوں کے اندر شروع کیا جائے‘ وہ وزیراعلیٰ ہائوس میں سانحہ شکار پور اور سانحہ جیکب آباد شہداء کمیٹی کے اجلاس سے خطاب کررہے تھے‘ وزیراعلیٰ نے آئی جی سندھ کو مزید ہدایت کی کہ وہ بلوچستان سے ملحقہ اضلاع میں انسداد دہشت گردی کے محکمے کے پولیس اسٹیشن کی نگرانی اور چیکنگ کو سخت کیاجائے تاکہ بلوچستان سے بالائی سندھ میں آنیوالے دہشت گردوں کا قلع قمع کیا جاسکے اس موقع پر وزیراعلیٰ سندھ نے کہا کہ ہم نے دونوں سانحات کے شہداء کے ورثاء کو 20,20لاکھ روپے ایک ہفتے کے اندر بطور معاوضہ اداکئے جبکہ تمام زخمیوں کا علاج آغا خان اسپتال میں مفت کرایا جو کہ حکومت کی ذمہ داری بھی ہے‘ وزیراعلیٰ سندھ نے یقین دلایا کہ جلد ہی معمولی زخمیوں کو بھی فی کس دو لاکھ روپے اور شدید زخمیوں کو 10,10لاکھ روپے فی کس معاوضہ دیا جائیگا۔