رینجرزاختیارات میں توسیع نہ ہونے سے غیرمتوقع حالات پیش آسکتے ہیں،تجزیہ کار

December 14, 2015 12:01 pm0 commentsViews: 26

سندھ اسمبلی میں رینجرز کے خلاف کوئی مذمتی بحث ہوئی تو صورتحال بہت زیادہ پیچیدہ ہوجائے گی
ایک ایسی فورس جس نے کراچی میں شاندار کارکردگی دکھائی ہے اس میں کیڑے نکالنا بے وقوفی ہوگی
وفاق اور سندھ حکومت کے درمیان تعلقات مزید کشیدہ ہوسکتے ہیں،تجزیہ کار
اسلام آباد(یو پی پی )کراچی میں رینجرز کو پولیس کے اختیارات کی توسیع کرنے میں آج (پیر )مزید تاخیر کی گئی، یا اس کے اختیارات پر کوئی قدغن لگائی گئی، یا سندھ اسمبلی میں رینجرز کے خلاف کوئی مذمتی بحث ہوئی تو صورتحال بہت زیادہ پیچیدہ ہوجائے گی اور غیظ و غضب میں شدید اضافہ ہوجائے گا۔ جس کے نتیجے میں صوبائی حکومت کو غیرمتوقع صورتحال بھی پیش آسکتی ہے۔ اعلیٰ سطح کے وفاقی ذرائع نے بتایا کو اگر رینجرز اختیارات کی توثیق سے پہلے اسے سندھ اسمبلی میں تنقید کا نشانہ بنایا گیا تو یہ ناقابل قبول ہوگا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ ایک ایسی فورس میں کھلے عام کیڑے نکالنا حماقت اور بے وقوفی ہوگی جس کی کراچی میں شاندارکارکردگی کی ہر کسی نے تعریف و توصیف کی ہے۔ ذرائع نے کہا کہ وفاقی انتظامیہ اس بات سے آگاہ ہے کہ حکومت سندھ پاکستان پیپلزپارٹی کے سینئر رہنمائوں کے احکامات پر عمل کررہی ہے اور ٹارگٹڈ آپریشن کے دوران رینجرز کے کردار پر صوبائی اسمبلی میں ایک فالتو اور بیکار کی بحث کو بڑھانا چاہتی ہے تاکہ فورس کو بدنام کیاجاسکے۔ ذرائع نے کہا کہ ظاہر ہے اس سے وفاق اور سندھ حکومت کے درمیان تعلقات مزید خراب ہوجائیں گے۔ تاہم ان کا کہنا تھا کہ رینجرز کے اختیارات میں توسیع میں سندھ حکومت کے تاخیری حربوں پر وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان کے سخت ردعمل کے بعد ،وفاقی حکام کو امید ہے کہ صوبائی اسمبلی، جس پر پیپلزپارٹی کا کنٹرول ہے، اس میں جان بوجھ کر کوئی ناخوشگوار صورتحال پیدا نہیں کی جائے گی۔