آرٹس کونسل کے الیکشن، بزنس کمیونٹی کا احمد شاہ پینل کی حمایت کا اعلان

December 14, 2015 12:38 pm0 commentsViews: 46

انتخابی جلسے میں ایس ایم منیر، خالد تواب،اختیار بیگ، عبدالحسیب، فرحان الرحمن اور دیگر تجارتی شخصیات کی شرکت
احمد شاہ کا اس بار الیکشن میں حصہ نہ لینے کا اعلان، پینل کی طرف سے ڈاکٹر ہما میر سیکریٹری کا الیکشن لڑیں گی
کراچی (اسٹاف رپورٹر) آرٹس کونسل آف پاکستان کراچی میں 20دسمبر کو ہونے والے الیکشن میںمختلف مکاتب فکر سے تعلق رکھنے والی انجمنوں، بزنس کمیونٹی ، فنون لطیفہ کے مایہ ناز فنکارو ں اور صداکاروں نے احمد شاہ اعجاز فاروقی پینل کی حمایت کا اعلان کیا ہے۔ اتوار کے روز پینل کے پہلے انتخابی جلسے میں خطاب کرتے ہوئے ایس ایم منیر،خالد تواب،سینیٹر عبدالحسیب خان، رئوف لالہ،باری جیلانی،فرحان الرحمٰن، پروفیسر ہارون الرشید، واثق نعیم،سلمیٰ وحید مراد، ، نور احمد نکاٹی،فیصل ندیم، اے ایچ خانزادہ اور دیگر نے کہا کہ ہم آرٹس کونسل کی ترقی، فنون لطیفہ کی ترویج اور کراچی شہر میں روشنی و رنگوں کی وجہ سے ہمیشہ احمد شاہ ۔اعجاز فاروقی پینل کی حمایت کرتے ہیں اور اس مرتبہ بھی اس میں کمی نہیں اضافہ ہو گا۔ اس سے پہلے احمد شاہ اعجاز فاروقی پینل کے روح رواں محمد احمد شاہ نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہم نے آرٹس کونسل کی ترقی کیلئے تمام مخالفتیں، عدواتیں اور طعنے برداشت کیے لیکن کبھی بھی ٹس سے مس نہیں ہوئے۔ ہم نے اپنا کام جاری رکھا حتیٰ کہ مخالفین نے نیب تک ہمیں کھینچا لیکن نیب نے ہزاروں کاغذات کی چھان بین کرکے ہمیں سرخرو کیا اور ہمارے مخالفین کو اپنے منہ کی کھانی پڑی۔ انہوں نے کہا کہ ہم اس مرتبہ کچھ تبدیلیا ںکر رہے ہیںکچھ نئے چہرے ساتھ رکھے ہیں، وہ آرٹس کونسل کیلئے نئے نہیں انہوں نے کہا کہ ہم اپنے بزرگوں کی سرپرستی میں مزید آگے بڑھیں گے اور تہذیب کے اس ادارے کو کبھی بھی جہالت کے حوالے نہیں کریں گے۔ محمد احمد شاہ نے الیکشن کیلئے تمام عہدیداران اور گورننگ باڈی کے امیدواروں کا تعارف کراتے ہوئے ان کی فن و ثقافت کے حوالے سے وابستگیاں اور خوبیاں بیان کیں جس کے تحت صدر کیلئے پروفیسر اعجاز فاروقی، نائب صدر پروفیسر سحر انصاری، سیکریٹری ڈاکٹر ہما میر، جوائنٹ سیکریٹری اطہر وقار عظیم اور خازن کیلئے شہناز صدیقی کو چنا گیا جبکہ گورننگ باڈی کیلئے محترمہ قدسیہ اکبر، سہیل احمد، کاشف گرامی ، سید سعادت جعفری، طلعت حسین، ڈاکٹر ایس ایم قیصر سجاد، شیخ راشد عالم، سید ساجد حسن، منور سعید،ڈاکٹر محمد ایوب شیخ اور محترمہ حسینہ معین صاحبہ امیدوار ہوں گی۔آرٹس کونسل کے صدر اور الیکشن میں صدارت کیلئے نامزد امیدوار اور کراچی کرکٹ کے روح رواں پروفیسر اعجاز احمد فاروقی نے اپنے خطاب میں کہا کہ ہم مزید کوشش کریں گے کہ نئے نئے زاویوں سے اس ادارے کو ترقی کی راہ پر گامز ن کریں گے۔ انہوں نے کہا کہ ملک میں جامعات ایک سیشن یا مذاکرے کو ’’کانفرنس‘‘ کا نام دیتی ہیں لیکن ہم نے آٹھویں سالانہ عالمی اُردو کانفرنس کا انعقاد کر کے ہر دن سات سے آٹھ سیشن منعقد کئے اور ہر سیشن میں دنیا بھر کے علماء اور ماہرین نے حصہ لیا اور چار دن کی کانفرنس میں گویا کسی بھی جامعہ کی 28کانفرنسوںکے برابر ہوتی ہے انہوں نے مزید کہا کہ ہر سال یہ روایت قائم کرنا آرٹس کونسل ہی کر سکتی تھی انہوں نے تمام ممبران سے اپیل کی کہ 20دسمبر کو اپنے قومی شناختی کارڈ یا آرٹس کونسل کے کارڈ کے ہمراہ ضرور تشریف لائیں اور تہذیب کے روشن مینار کو برقرار رکھنے میں ہماری معاونت کریں۔پروفیسر اعجاز فاروقی نے کہا کہ جب محمد احمد شاہ نے الیکشن نہ لڑنے کے بارے میں اپنے فیصلے سے مجھے آگاہ کیا تھا تو مجھے سخت تشویش ہوئی تھی اور میں نے انہیں اس فیصلے پر نظر ثانی کی گذارش کی تھی لیکن انہوں نے کہا کہ وہ بغیر عہدوں کے بھی آرٹ اور آرٹس کونسل کی خدمت کرتے رہیں گے، جس بات سے ادبی اور فنی حلقوں میں ان کا قد مزید اونچا ہو گیا ہے اور مخالفین کی وہ باتیں بھی دم توڑ چکی ہیں جو کہتے تھے کہ محمد احمد شاہ عہدے کے بغیر نہیں رہ سکتے۔ جلسے میں پروفیسر اعجاز فاروقی نے جب تجویز پیش کی کہ احمد شاہ کی خدمات کے عوض’’صدارتی‘‘ ایوارڈ دیا جائے تو پورے جلسے میں زور دار تالیوں نے اس بات کی پروزور تائید کی۔ اس سے قبل سیکریٹری کے عہدے کے لیے فنون لطیفہ کی نامور شخصیت اور مصنفہ و اینکر ڈاکٹر ہما میر نے خطاب کرتے ہوئے وعدہ کیا کہ وہ احمد شاہ اعجاز فاروقی پینل اور آرٹس کونسل کی ٹیم کے ہمراہ کام کر کے کوئی کسر اٹھا نہیں رکھیں گی۔ اس موقع پر بزنس کمیونٹی سے وابستہ افراد میں مرزا اختیار بیگ، واثق نعیم، مہتاب چاولہ، اخلاق احمد، جاذب قریشی اور فنکاروں میں سلیم آفریدی، علی حسن، شاہد رانا، دانش مقصود، حسن جہانگیر و دیگر بھی موجود تھے۔ علاوہ ازیں ڈاکٹر عمران علی شاہ نے ممبران آرٹس کونسل کیلئے AOکلینک میں ممبر شپ کارڈ دکھانے پرعلاج معالجہ پر 20فیصد ڈسکائونٹ کا اعلان کیا۔

حیدرعباس رضوی نے شہرقائد پینل کی حمایت کا اعلان کردیا
ماضی میں شہر قائد پینل ہارا نہیں بلکہ مخالفین کو جتوایا گیا، مگر اب ایسا نہیں ہوگا، تقریب سے خطاب
شہر قائد پینل کی جانب سے رضوان صدیقی صدر اور نجم الدین شیخ سیکریٹری کا الیکشن لڑرہے ہیں
کراچی (اسٹاف رپورٹر) ایم کیو ایم کے رہنما اور سابق ممبر قومی اسمبلی حیدر عباس رضوی نے آرٹس کونسل آف پاکستان کراچی کے انتخابات میں شہر قائد پینل کی حمایت کا اعلان کرتے ہوئے کہا ہے کہ ماضی میں شہر قائد پینل ہارا نہیں بلکہ مخالفین کو جتایا جاتا رہا مگر اب ایسا نہیں ہوگا۔ شہر قائد کے ادیبوں، دانشوروں، آرٹسٹوں اور کراچی آرٹس کونسل کے ممبران کے ووٹ اب شہر قائد پینل ہی کو ملنا چاہئے میں آرٹس کونسل کا مایوس ممبر ہوں جس کو آرٹس کونسل میں آرٹس کے حوالے سے کچھ نظر نہیں آیا، ڈھول ڈبہ فنون لطیفہ نہیں اورصرف گہما گہمی فن کے فروغ کا نام نہیں ہے، ہونا یہ چاہئے تھا کہ فنون لطیفہ کے کئی ادارے ایک مرکزی آرٹس کونسل سے فروغ پاتے مگر ایسا نہیں ہوسکا۔ متعدد مرتبہ غلطیوں کی نشاندہی کی جاتی رہی ہر مرتبہ یہ کہا جاتا رہا کہ آئندہ درست کرلیں گے جو صرف زبان کی حد تک محدود رہا۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے شہر قائد پینل کے انتخابی جلسہ سے خطاب کرتے ہوئے کیا جو اتوار کو ایک مقامی ہال میں منعقد ہوا، اجلاس میں ایم کیو ایم کے رہنما امین الحق، عادل خان، ممبر قومی اسمبلی ڈپٹی اقبال خان، ریحان ہاشمی اور دیگر معززین شہر اور آرٹس کونسل کے ممبران کی کثیر تعداد نے شرکت کی۔ حیدر عباس رضوی نے کہا کہ کراچی نہ صرف پاکستان بلکہ پورے خطے کا نمائندہ شہر ہے لہٰذا یہاں کے ادارے پاکستان کی نمائندہ ہونا چاہئے،آرٹس کونسل نے ایسا کوئی کام نہیں کیا جس پر فخر کیا جاسکے اور فنون لطیفہ کی ترقی کا باعث بنے اب ہم آرٹس کونسل کی ترقی کے لئے شہر قائد پینل کی حمایت کرتے ہیں تاکہ آرٹس کونسل کو ایسا ادارہ بنایا جاسکے جہاں فنون لطیفہ کی تمام جہتوں کو پھلنے پھولنے کا موقع ملے، ماضی میں آرٹس کونسل میں کوئی ایسا کام دیکھنے میں نہیں آیا جو کراچی کی شناخت سندھ کے لئے باعث عزت اور پاکستان کے نام کو بلند کرتا ہو اس لئے اب آرٹس کونسل کے قبلے کو درست کرنے کی ضرورت ہے۔ انور احمد زئی نے کہا کہ فنون لطیفہ کی حیثیت جسم کے اندر روح کی طرح ہے اب شہر قائد کے دانشوروں کی ذمہ داری ہے کہ وہ اس کو درست کریں۔ اجلاس سے گلنار آفرین، بختیار احمد، خلیل خان، مختار جنیدی، آغا طارق، حسن عباس، واجد رضا اصفہانی ، محمد شکیل، حسنین رضوی اور دیگر نے خطاب کیا جبکہ ممتاز مقرر اور وکیل ایس ایم شجاع نے کمپیئرنگ کے فرائض انجام دیئے ۔ شہر قائد پینل کے صدارتی امیدوار رضوان صدیقی نے مختصر خطاب اور پینل کے اراکین کا تعارف کرایا شہر قائد پینل میں صدر کے امیدوار رضوان صدیقی ، نائب صدر کے امیدوار ایم ظہیر خان، سیکریٹری کے امیدوار نجم الدین شیخ ، جوائٹ سیکریٹری کے لئے خالد آرائیں، خازن کے لئے امجد فرید صابری امیدوار ہوں گے جبکہ گورننگ باڈی کے لئے محمد ایوب، سید سہیل عابدی، اویس ادیب انصاری، جاوید صبا، آغا مسعود حسین، طارق سبزواری ، حکیم مجاہد محمود برکاتی، ڈاکٹر بلند اقبال، روبینہ اشرف، تاجدار عادل، محمد ایوب کھوسہ، عبدالحکیم ناصف امیدوار ہوں گے۔