پانی کی پائپ لائن پھٹنے سے ہائیڈرنٹ مافیا کی چاندی

December 14, 2015 12:59 pm0 commentsViews: 86

مافیا شہریوں کی مجبور ی کا فائدہ اٹھاتے ہوئے من مانی قیمت پر پانی فروخت کررہی ہے
کراچی( اسٹاف رپورٹر) ادارہ فراہمی و نکاسی آب کراچی کی نظارت (عقب عزیز بھٹی پارک) پر84 انچ قطر کی مرکزی لائن پھٹنے سے بدستور پانی بہہ رہا ہے جس کے باعث اتوار کو رات گئے تک پائپ لائن کی تبدیلی کام شروع نہیں ہو سکا، واٹر بورڈ کے متعلقہ انجینئرز نے بتایا کہ پائپ لائن کی تبدیلی کا عمل آئندہ48 تا72 گھٹوں میں مکمل کرکے پانی کی فراہمی شروع کر دی جائے گی، اس دوران شہر کے کئی علاقوں میں قلت آب ہوگئی، تفصیلات کے مطابق واٹر بورڈ کی مرکزی پائپ لائن جو شہر کو60 ملین گیلن پانی روزانہ فراہم کرتی تھی ، گزشتہ روز پھٹنے سے اب تک 6 کروڑ گیلن پانی ضائع ہو گیا تھا یونیورسٹی روڈ سمیت کئی سٹرکیں زیر آب آگئی تھیں، واٹر بورڈ کے ذرائع نے بتایا کہ واٹر بورڈ میں والو آپریشن کا نظام گزشتہ10 سال سے مناسب مرمت نہ ہونے کے باعث کمزور ہو گیا ہے جس کے باعث پھٹنے والی نیپا چورنگی گلشن اقبال میں پائپ لائن سے پانی کا بہائو جاری ہے، تاہم واٹر بورڈ کے متعلقہ انجینئر کا موقف ہے کہ مرکزی پائپ لائن جس مقام پر پھٹی ہے وہ نشیبی ہے اس لیے پانی بڑی مقدار میں جمع ہے، اور پیچھے سے بھی آ رہا ہے اس لیے مرمت کے کام میں دشواریاں درپیش ہیں، ترجمان واٹر بورڈ کے مطابق واٹر بورڈ کی مرکزی پائپ لائن گزشتہ روز پھٹ گئی تھی جس کی وجہ سے اس کا پانی سٹرک پر بہنے لگا، واٹر بورڈ کے افسران و عملہ گزشتہ36 گھنٹوں سے پائپ لائن کی تبدیلی کا کام کر رہا ہے، پھٹنے والی لائن کا پانی فوری طور پر دھابیجی سے بند کر دیا گیا، واٹر بورڈ کی مخدوش پائپ لائن گریٹر کراچی واٹر اسکیم کے تحت1958 میں ڈالی گئی تھی پائپ لائن میں تین روز قبل معمولی رسائو تھا جس کی مرمت کیلئے کارروائی جاری تھی تاہم پائپ لائن گزشتہ روز پھٹ گئی اور اس کے پھٹنے سے پانی سٹرکوں پر آگیا، پانی بہائو روکنے کیلئے پانی دھابیجی سے بند کیا گیا اور کرین کے ذریعے گیٹ گرا دیا گیا، تاہم لائن میں موجود پانی کا بہائو تیز ہونے کی وجہ سے پائپ لائن کی تبدیلی کا کام نہیں شروع ہو سکا، جبکہ متبادل پائپ اور بھاری مشینری متاثرہ مقام پر پہنچا دی گئی ہے جیسے ہی پانی کی فراہمی مکمل طور پر بند ہو گی پائپ کی تبدیلی کا کام فوری طور پر شروع کر دیا جائے گا جو آئندہ24 سے36 گھنٹوں میں مکمل کر لیا جائے گا۔