رینجرز اختیارات کے حوالے سے قرار داد آج منظور ہونے کا امکان

December 16, 2015 9:30 pm0 commentsViews: 23

سندھ اسمبلی کا اجلاس وزیر اعلیٰ کے آرمی پبلک اسکول کی تقریب میں شرکت کے باعث تاخیر سے طلب کرلیا گیا
وزیر اعلیٰ قرار داد کی منظوری کے موقع پر ازخود موجود رہنا چاہتے ہیں‘ وہ گزشتہ شام پشاور پہنچ گئے آج واپس آجائیں گے
کراچی( اسٹاف رپورٹر) سندھ اسمبلی کا اجلاس بدھ کی سہ پہر تین بجے تک ملتوی کردیا گیا‘امید ہے کہ آج رینجرز کے قیام اور اختیارات میں توسیع کے حوالے سے قرار داد منظور کرلی جائیگی‘ اجلاس صبح دس بجے کے بجائے سہ پہر تین بجے طلب کرنے کے حوالے سے حکومت سندھ کے ذرائع نے بتایا کہ وزیراعلیٰ سندھ سید قائم علی شاہ بدھ کی صبح پشاو ر میں آرمی پبلک اسکول کے شہداء کی یاد میں ہونیوالی مرکزی تقریب میں شرکت کریں گے اور وہ دوپہر میں واپس کراچی پہنچ جائیں گے‘ رینجرز کے حوالے سے قرار داد کی منظوری کے موقع پر وزیراعلیٰ سندھ از خود اجلاس میں موجود رہنا چاہتے ہیں‘ اس لئے اجلاس سہ پہر تین بجے بلایا گیا ہے ‘وزیراعلیٰ سندھ منگل کی شام پشاور روانہ ہوگئے۔

سندھ اسمبلی میں شہداء آرمی اسکول
پشاور کی یاد میں شمعیں جلائی جائیں گی
کراچی (اسٹاف رپورٹر) سینئر صوبائی وزیر نثار احمد کھوڑو نے کہا ہے کہ آرمی پبلک اسکول پشاور کے شہداء کی یاد میں آج سندھ اسمبلی میں شمعیں روشن کی جائیں گی۔

اختیارات کا نوٹیفکیشن
آج جاری ہو جائیگا‘ رحمن ملک
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سابق وزیر داخلہ رحمن ملک نے کہا ہے کہ آج شام تک رینجرز کو اختیارات کا نوٹیفکیشن جاری کردیا جائے گا۔ نجی ٹی وی کے مطابق رحمن ملک کا کہنا تھا کہ آئین کے تحت کسی بھی وفاقی ادارے کو بلانے کی توثیق صوبائی اسمبلی کرتی ہے جبکہ ماضی میں ایسا نہیں ہوتا رہا ہے لیکن اب کیا جارہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ سانحہ پشاور کو ایک سال ہوگیا مگر آج ہم میں اتفاق و اتحاد نظر نہیں آرہا ہے۔ نیشنل ایکشن پلان پر پوری طرح سے عمل در آمد نہیں ہورہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ رینجرز کو اختیارات میں توسیع دینے کا فیصلہ آئین اور قانون کے مطابق کیا جائے گا، دیکھیں گے ان کے قانونی اختیارات کیا ہیں۔

ایم کیو ایم کا سندھ اسمبلی کے اجلاس سے احتجاجاً واک آئوٹ
اپنے رکن خالد احمد کی تحریک استحقاق خلاف ضابطہ قرار دیئے جانے پر واک آئوٹ کیا گیا
کورنگی کی خاتون ایڈمنسٹریٹر کو بلدیاتی مسائل کے حل کیلئے خطوط لکھے تھے کوئی جواب نہیں دیا گیا
اسمبلی میں بات نہ سنی گئی تو ہزاروں لوگوں کے ساتھ ایڈمنسٹریٹر کے دفتر کے باہر مظاہرہ کریں گے‘ خواجہ اظہار
پریس کانفرس کرکے خاتون ایڈمنسٹریٹر کی کرپشن بھی بے نقاب کی جائیگی‘ متحدہ رہنما کی میڈیا سے بات چیت
کراچی( اسٹاف رپورٹر) سندھ اسمبلی میں منگل کو متحدہ قومی موومنٹ کے ارکان نے اپنے رکن سید خالد احمد کی تحریک استحقاق کے خلاف ضابطہ قرار دیئے جانے پر ایوان سے احتجاجاً واک آئوٹ کیا‘ سید خالد احمد نے اپنی تحریک استحقاق میں کہا کہ انہوں نے ڈسٹرکٹ میونسپل کارپوریشن کورنگی کی خاتون ایڈمنسٹریٹر کو تین خطوط لکھے اور ان سے وقت مانگا تاکہ وہ اپنے علاقے کے بلدیاتی مسائل کے بارے میں انہیں بتاسکیں لیکن خاتون ایڈمنسٹریٹر نے کوئی جواب نہیں دیا اس سے انکا استحقاق مجروح ہوا‘ سینئر وزیر تعلیم نثار احمد کھوڑو نے اس تحریک استحقاق کی مخالفت کی اور کہا کہ ایڈمنسٹریٹر نے ان خطوط کے جواب دیئے یہ کہنا غلط ہے کہ جواب نہیں دیا گیا‘ اس لئے یہ تحریک استحقاق نہیں بنتی تاہم مسئلہ حل کرنے کیلئے ایڈمنسٹریٹر کو بلا کر ان سے وضاحت طلب کی جائے‘ اپوزیشن لیڈر خواجہ اظہار الحسن نے کہا کہ تحریک استحقاق خصوصی کمیٹی کے سپرد کی جائے ورنہ ہمارے پاس یہ راستہ بھی ہے کہ ہم ہزاروںلوگوں کو یکجا کر کے ایڈمنسٹریٹر کے دفتر کے باہر مظاہرہ کریں‘ ہم پریس کانفرنس کرکے ایڈمنسٹریٹر کی کرپشن کو بے نقاب کریں گے‘ ڈپٹی اسپیکر نے تحریک استحقاق کو قواعد کے خلاف قرار دے دیا جس پر ایم کیو ایم کے ارکان نے احتجاجاً ایوان سے واک آئوٹ کیا تاہم پہلے انہوں نے گو ایڈمنسٹریٹر گو کے نعرے لگائے‘ بعد ازاں ڈپٹی اسپیکر نے اجلاس بدھ کو سہ پہر تین بجے تک ملتوی کردیا۔